உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اے ایم یو کے اقلیتی کردارکی بحالی میں رخنہ اندازی افسوسناک : مولانا اصغر علی امام مہدی سلفی

    دہلی: مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے ناظم عمومی مولانا اصغر علی امام مہدی سلفی نے میڈیا کو جاری اپنے ایک بیان میںمسلم یونیورسٹی علی گڑھ کے اقلیتی کردار سے متعلق مرکزی حکومت کے رویے میں تبدیلی اورسپریم کورٹ میں داخل مرکزی حکومت کی پٹیشن کو واپس لینے کی درخواست کو اس ادارے کے اقلیتی کردار کی بحالی میں رخنہ اندازی سے تعبیرکرتے ہوئے انتہائی غیرذمہ دارانہ اورافسوسناک عمل قرار دیاہے۔

    دہلی: مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے ناظم عمومی مولانا اصغر علی امام مہدی سلفی نے میڈیا کو جاری اپنے ایک بیان میںمسلم یونیورسٹی علی گڑھ کے اقلیتی کردار سے متعلق مرکزی حکومت کے رویے میں تبدیلی اورسپریم کورٹ میں داخل مرکزی حکومت کی پٹیشن کو واپس لینے کی درخواست کو اس ادارے کے اقلیتی کردار کی بحالی میں رخنہ اندازی سے تعبیرکرتے ہوئے انتہائی غیرذمہ دارانہ اورافسوسناک عمل قرار دیاہے۔

    • News18
    • Last Updated :
    • Share this:

      دہلی: مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے ناظم عمومی مولانا اصغر علی امام مہدی سلفی نے میڈیا کو جاری اپنے ایک بیان میںمسلم یونیورسٹی علی گڑھ کے اقلیتی کردار سے متعلق مرکزی حکومت کے رویے میں تبدیلی اورسپریم کورٹ میں داخل مرکزی حکومت کی پٹیشن کو واپس لینے کی درخواست کو اس ادارے کے اقلیتی کردار کی بحالی میں رخنہ اندازی سے تعبیرکرتے ہوئے انتہائی غیرذمہ دارانہ اورافسوسناک عمل قرار دیاہے۔


      یبان میں کہا گیا ہے کہ مرکزی حکومت کے موقف میں اس چونکادینے والی تبدیلی سے اس بات کی قلعی کھل گئی ہے کہ مرکزمیں موجودہ سرکار سب کی ترقی کے صرف کھوکھلے دعوے کرتی ہے اور حقیقت سے اس کا کوئی سروکارنہیں ہے۔یونیورسٹی کے اقلیتی کردار کی بحالی کے فیصلہ کا جونہی وقت قریب آیاہے اس تبدیلی سے مرکز ی سرکار کی بدنیتی واضح ہوگئی ہے۔اورحکومت کے اس غیرذمہ دارانہ رویہ کا نقصان چونکہ مسلمانوں کو ہی جھیلنا پڑے گا ۔ اس لئے اس سے ان کے اندر اضطراب وبے چینی کا پایاجانا فطری امرہے۔


      ناظم عمومی نے مزید کہا کہ مسلم یونیورسٹی علی گڑھ ہمارے اسلاف کا قائم کردہ ایک پر وقار ادارہ ہے ، جس کا مقصدمسلم قوم کی تعلیمی پسماندگی دور کرکے اس کی تعمیر وترقی میں نمایاں کردار ادا کرتے ہوئے ہم وطنوں کے شانہ بشانہ ملک کی تعمیر و ترقی تھا۔ اس ادارے نے یہ ذمہ داری بحسن وخوبی نبھائی اور تعلیمی،سماجی اور سیاسی بیداری لانے میں اہم کردار اداکیا اور قابل قدر خدمات انجام دیں۔

      First published: