உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    آرایس ایس مدارس کو حب الوطنی کا درس نہ دے : دارالعلوم دیوبند

    دارالعلوم دیوبند: فائل فوٹو۔

    دارالعلوم دیوبند: فائل فوٹو۔

    لکھنؤ۔ آرایس ایس کی سرپرستی میں سرگرم مسلم راشٹریہ منچ (ایم آر ایم) کے ذریعہ مدارس میں قومی پرچم لہرانے کی ملک گیر مہم پر اپنا ردعمل ظاہر کرتے ہوئے دارالعلوم دیوبند نے سوال کیا کہ سنگھ ناگپورمیں اپنے ہیڈکوارٹر پر قومی ترنگا کب لہرائے گا۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      لکھنؤ۔ آرایس ایس کی سرپرستی میں سرگرم مسلم راشٹریہ منچ (ایم آر ایم) کے ذریعہ مدارس میں قومی پرچم لہرانے کی ملک گیر مہم پر اپنا ردعمل ظاہر کرتے ہوئے دارالعلوم دیوبند نے سوال کیا کہ سنگھ ناگپورمیں اپنے ہیڈکوارٹر پر قومی ترنگا کب لہرائے گا۔ خیال رہے کہ آر ایس ایس کی ذیلی تنظیم مسلم راشٹریہ منچ کے صدر اندریش کمار نے 8 جنوری کو ملک بھر کے دینی مدارس کو ایک خط لکھ کر جشن جمہوریہ منانے کی اپیل کی ہے۔


      اندریش کمار کے اس خط پر سخت ردعمل ظاہر کرتے ہوئے دارالعلوم دیوبند کے مہتمم مفتی ابوالقاسم نعمانی نے کہا کہ مدارس اسلامیہ کو حب الوطنی کا درس دینے کی بالکل ضرورت نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ سنگھ نے آزادی کی لڑائی میں کوئی رول ادا نہیں کیا اور نہ ہی کبھی ترنگے کا احترام کیا ۔ وہ صرف اپنے بھگوا پرچم پر یقین کرتی ہے اور اس کے سامنے ہی اپنا سر جھکاتی ہے۔ مولانا نعمانی نے کہا کہ مدارس اسلامیہ حب الوطنی کی تعلیم دیتے ہیں اور اس ملک کو غلامی سے آزادی دلانے میں علمائے کرام نے جو رول ادا کیا اس کی کوئی اور مثال مشکل سے ہی ملے گی۔انہوں نے مزید کہا کہ ہم آزادی کی قدروقیمت جانتے ہیں ‘ ارباب مدارس اور وہ اپنے اپنے طور پر یوم جمہوریہ اور یوم آزادی تقاریب مناتے ہیں اور مدارس میں قومی پرچم لہرائے جاتے ہیں۔ مفتی نعمانی نے آر ایس ایس کا نام لئے بغیر کہا کہ ہندوستان میں بہت سی فرقہ پرست تنظیمیں ترنگے اور قومی گیت پریقین نہیں رکھتی ہیں لیکن حب الوطنی کا دعوی کرتی ہیں۔


      دریں اثنا راشٹریہ مسلم منچ نے دارالعلوم دیوبند کی طرف سے کئے گئے سوال کے جواب میں کہا کہ تمام قومی تہواروں پر آرایس ایس سے وابستہ سرسوتی ششو مندر اسکولوں میں ترنگا لہرایا جاتا ہے اور سنگھ کی ملک بھر کی شاکھاوں میں بھی قومی تہوار منائے جاتے ہیں۔ ایم آر ایم کا کہنا ہے کہ کسی بھی جگہ کو سنگھ کے آفس کے طور پر مخصوص نہیں کیا گیا ہے۔ منچ کے علاقائی کنوینر مہیدھر دھوج سنگھ نے کہا کہ اس مہم میں کوئی سیاست نہیں ہے اور ان کا مقصد صرف ملک دشمن طاقتوں کو جواب دینا ہے ۔ منچ نے کبھی یہ مشورہ نہیں دیا کہ مساجد پر قومی پرچم لہرائے جائیں لیکن قومی تہواروں پر تعلیمی اداروں میں قومی پرچم ضرو ر لہرائے جانے چاہئیں۔

      First published: