ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

میرٹھ : ائمہ مساجد کی مالی امداد کے لئے مسلمانوں سے آگے آنے کی شہر قاضی کی اپیل

ماہ رمضان کے دوران ائمہ مساجد کی مالی امداد کے لئے حاصل ہونے والا چندہ بھی جمع نہیں کیا جا رہا ہے ، ایسے میں شہر قاضی میرٹھ نے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ ذاتی طور پر ائمہ مساجد کی مالی امداد کے لئے پیش رفت کریں اور ان مشکل حالات میں ان افراد کی ہر ممکن مدد کرنے کی کوشش کریں ۔

  • Share this:
میرٹھ : ائمہ مساجد کی مالی امداد کے لئے مسلمانوں سے آگے آنے کی شہر قاضی کی اپیل
میرٹھ : ائمہ مساجد کی مالی امداد کے لئے مسلمانوں سے آگے آنے کی شہر قاضی کی اپیل

لاک ڈاؤن کے سبب ملک میں تمام مذہبی مقامات اور مساجد کو بند رکھا گیا ہے ، ایسے میں ماہ رمضان میں مساجد میں نماز اور تراویح کا اہتمام بھی نہیں کیا جا رہا ہے ۔ ماہ رمضان کے دوران  ائمہ مساجد کی مالی امداد کے لئے حاصل ہونے والا چندہ بھی جمع نہیں کیا جا رہا ہے ، ایسے میں شہر قاضی میرٹھ نے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ ذاتی طور پر ائمہ مساجد کی مالی امداد کے لئے پیش رفت کریں اور ان مشکل حالات میں ان افراد کی ہر ممکن مدد کرنے کی کوشش کریں ۔


شہر قاضی کے مطابق مساجد میں خدمات انجام دینے والے موذن اور ائمہ بہت کم اجرت پر پر یہ دینی خدمات انجام دیتے ہیں ، جو ان کے اور ان کے اہل خانہ کی ضرورتوں کو پورا کرنے کے لئے پہلے ہی ناکافی ہوتی تھی ، لیکن ماہ رمضان کے دوران مساجد میں جمع کیے جانے والے چندے اور صاحب حیثیت افراد کی مالی امداد کے ذریعہ ان کی سال بھر کی ضرورت کو پورا کیا جاتا تھا ، لیکن لاک ڈاؤن کے سبب پیدا ہوئے حالات میں اب مساجد بھی بند اور چندہ بھی جمع ہونے کی کوئی صورت نظر نہیں آرہی ہے ، ایسے میں ضروری ہے کہ لوگ ذاتی طور پر پیش رفت کرتے ہوئے اپنے سماجی اور مذہبی فریضے کو انجام دینے کے لیے آگے آئیں ۔ تاکہ اس مشکل وقت میں ان ضرورتمند افراد کی مدد کی جا سکے ۔


شہر قاضی میرٹھ نے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ فطرہ اور زکوٰۃ کی رقم کو بھی اس مد میں استعمال کر سکتے ہیں ۔ شہر قاضی نے کہا کہ ان حالات میں عید سے پہلے ہی فطرے کی رقم ادا کر دی جائے ۔ تاکہ ضرورتمند اور مستحق افراد کی ضرورت کو وقت پر پورا کیا جا سکے ۔ شہر قاضی نے اس عمل میں بڑھ چڑھ کر لوگوں سے تعاون کی اپیل کی ہے ۔

First published: May 07, 2020 09:58 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading