اپنا ضلع منتخب کریں۔

    میرٹھ : اس وجہ سے پریشان ہیں ضلع انتظامیہ اور محکمہ صحت کے افسران

    سوریگ نام کی دوا کے ذریعہ کورونا کی روک تھام کیلئے ملک بھر کے سائنسداں اور محققین سرگرم

    سوریگ نام کی دوا کے ذریعہ کورونا کی روک تھام کیلئے ملک بھر کے سائنسداں اور محققین سرگرم

    ایک ہی دن میں محکمہ صحت کے پانچ ڈاکٹر اور ضلع انتظامیہ کے ایس ڈی ایم سے لے کر میونسپل کمشنر تک کے کورونا انفیکشن سے متاثر ہونے کے بعد اب محکمہ صحت نے احتیاطی اقدامات کرتے ہوئی ڈیوٹی کا رولر سسٹم لاگو کیا ہے ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
    میرٹھ میں گزشتہ ایک ماہ میں دس گنا سے بھی زیادہ تیزی سے بڑھ رہے کورونا انفیکشن کے معاملات پہلے ہی محکمہ صحت کے لیے بڑا چیلنج ثابت ہو رہے تھے اور ایسے میں اب ضلع انتظامیہ اور محکمہ صحت کے افسران اور اسٹاف کے کورونا انفیکشن سے متاثر ہونے کے بڑھ رہے معاملات نے محکمہ کے اعلیٰ افسران کو اور بھی پریشان کر دیا ہے ۔ لاک ڈاؤن کے ختم ہونے کے بعد سے یہ تعداد تیزی سے بڑھ رہی ہے ۔ ایک ہی دن میں محکمہ صحت کے پانچ ڈاکٹر اور ضلع انتظامیہ کے ایس ڈی ایم سے لے کر میونسپل کمشنر تک کے کورونا انفیکشن سے متاثر ہونے کے بعد اب محکمہ صحت نے احتیاطی اقدامات کرتے ہوئی ڈیوٹی کا رولر سسٹم لاگو کیا ہے ، لیکن اس وجہ سے ڈیوٹی اسٹاف میں آئی کمی بھی ان حالات میں افسران کے لیے پریشانی کا سبب بن رہی ہے ۔

    آج کی تاریخ میں میرٹھ میں کورونا مثبت مریضوں کی مجموعی تعداد سات ہزار سے تجاوز کر گئی ہے ۔ روزانہ تقریباً 150 سے 200 معاملات سامنے آرہے ہیں ۔ سی ایم او راج کمار چودھری کے مطابق محکمہ صحت کی جانب سے ٹیسٹنگ کی رفتار میں تیزی آنے سے کورونا مثبت معاملات کی تعداد میں بھی اضافہ ہو رہا ہے ۔ لیکن ضلع انتظامیہ اور محکمہ صحت کے لیے سب سے زیادہ فکر کی بات یہ ہے کہ ڈیوٹی اسٹاف اور افسران میں بھی انفیکشن کے معاملات تیزی سے بڑھے ہیں ، جو محکمہ کے لیے فکر کی بات ہے ۔



    سرکاری دفاتر میں افسران اپنی ڈیوٹی انجام دینے کے دوران لوگوں کے ربط میں بھی آرہے ہیں ۔ تمام احتیاطی تدابیر کے باوجود انفیکشن کے بڑھتے معاملات پریشانی کا سبب بن رہے ہیں ۔ خاص طور پر  پچھلے دنوں میں محکمہ صحت کے ڈاکٹروں  میں تیزی سے بڑھتے انفیکشن کے معاملات نے اور بھی چیلنج پیدا کر دیا ہے ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: