ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

میرٹھ کے اس گاؤں میں مورتی استھاپنا پر بگڑتے بگڑتے سنبھلے حالات

میرٹھ کے سسولی گاؤں میں خالی سرکاری زمین پر کل رادھا کشن کی مورتی استھاپت کیے جانے کے بعد تنازعہ پیدا ہو گیا۔ معاملے کی جانکاری کے بعد پولیس نے موقع پر پہنچ کر حالات کو قابو میں کیا اور سرکاری زمین سے فوراً مورتی ہٹانے کو لیکر کاروائی کی۔

  • Share this:
میرٹھ کے اس گاؤں میں مورتی استھاپنا پر بگڑتے بگڑتے سنبھلے حالات
میرٹھ کے اس گاؤں میں مورتی استھاپنا پر بگڑتے بگڑتے سنبھلے حالات

میرٹھ کے سسولی گاؤں میں خالی سرکاری زمین پر کل رادھا کشن کی مورتی استھاپت کیے جانے کے بعد تنازعہ پیدا ہو گیا۔ معاملے کی جانکاری کے بعد پولیس نے موقع پر پہنچ کر حالات کو قابو میں کیا اور سرکاری زمین سے فوراً مورتی ہٹانے کو لیکر کاروائی کی۔ وہیں مورتی استھاپت کرنے والوں نے گاؤں کے دوسرے فرقے کے لوگوں پر قبرستان بنا کر زمین پر قبضہ کرنے کا الزام لگاتے ہوئے کاروائی کا مطالبہ کیا۔ پولیس نے مورتی رکھ کر گاؤں کے ماحول کو کشیدہ کرنے والوں کو سخت لہجے میں سمجھایا اور معاملے کو حل کروانے کی کوشش کی۔


میرٹھ کا سسولی گاؤں ہندو اور مسلمانوں کی ملی جلی آبادی والا گاؤں ہے جہاں دونوں مذہب کے ماننے والے لوگ آپس میں مل جل کر رہتے آئے ہیں لیکن جنم اشٹمی کے موقع پر کل اس گاؤں میں حالات اس وقت کشیدہ ہو گئے جب گاؤں کے ہندوؤں کے ایک طبقے نے خالی سرکاری زمین پر رادھا کرشنن کی مورتی استھاپت کر دی اور رادھا کشن کا مندر تعمیر کرنے کے لیے چبوترا بھی بنا دیا۔ غیر قانونی اور ناجائز طریقہ سے مندر تعمیر کے لیے مورتی نصب کیے جانے کی جانکاری پولیس تک پہنچنے کے بعد گاؤں میں کسی بھی ناخوشگوار واقعہ کے پیش آنے سے پہلے ہی پولیس نے فوری طور پر کاروائی کی۔


ایس ڈی ایم میرٹھ تحصیل کے پولیس نے گاؤں پہنچ کر لوگوں سے بات کی اور اس تنازعہ کو ختم کرنے کے لیے مندر تعمیر کے لیے ضد پر اڑے نوجوانوں سے سخت لہجے میں بات کرتے ہوئے مورتی کو فوراً ہٹانے کا حکم دیا۔ وہیں گاؤں کے ہندوؤں کا کہنا تھا کہ گاؤں کے مسلمانوں نے قبرستان کے لیے تالاب کی زمین پر بھی قبضہ کر لیا ہے اور پیر کی مزار بھی تعمیر کر لی ہے جسے خالی کرایا جائے۔ لیکن ایس ڈی ایم نے صاف طور پر ان لوگوں کو آگاہ کیا کہ جانکاری میں لایا گیا معاملہ اس معاملے سے الگ ہے اور مورتی کو زمین سے ہٹانا ہوگا۔ وہیں کچھ مقامی سیاسی لیڈران نے اس معاملے کو فرقہ وارانہ رنگ دینے کی کوشش کی جیسے پولیس نے ناکام بنا دیا۔

Published by: Nadeem Ahmad
First published: Aug 12, 2020 11:20 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading