ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

میرٹھ: دہلی میں کسان ٹریکٹر ریلی کے دوران ہوئے ہنگامے کا کسان تحریک پر ہوا کتنا اثر

کسان تحریک میں شامل کسان لیڈران کا ماننا ہے کہ اس طرح کے واقعات سے کسان تحریک پر کسی طرح کا اثر پڑنے والا نہیں ہے۔ کسان لیڈران نے ہنگامہ کرنے والے عناصر کی پہچان کرکے سزا دینے کا حکومت سے مطالبہ کیا ہے۔

  • Share this:
میرٹھ: دہلی میں کسان ٹریکٹر ریلی کے دوران ہوئے ہنگامے کا کسان تحریک پر ہوا کتنا اثر
دہلی میں کسان ٹریکٹر ریلی کے دوران ہوئے ہنگامے کا کسان تحریک پر ہوا کتنا اثر

میرٹھ ۔ زرعی قوانین کے خلاف دہلی میں کسانوں کی ٹریکٹر ریلی کے دوران ہوئے ہنگامے کے بعد کسان تحریک سے جڑے مغربی اُتر پردیش کے سماجی کارکنان اور کسان تنظیمیں حکومت کے سخت رویہ پر برہمی کا اظہار کر رہی ہیں۔ 26 جنوری کی کسان ٹریکٹر ریلی میں شامل ہونے دہلی پہنچے کسان لیڈران نے  اس ہنگامے اور تشدد کے لیے کسان تحریک کو نقصان پہنچانے والے عناصر کو قصوروار ٹھہرایا ہے۔ ساتھ ہی حکومت اور پولیس انتظامیہ کے انتظامات پر بھی سوال اٹھائے ہیں۔


کسان تحریک میں شامل کسان لیڈران کا ماننا ہے کہ اس طرح کے واقعات سے کسان تحریک پر کسی طرح کا اثر پڑنے والا نہیں ہے۔ کسان لیڈران نے ہنگامہ کرنے والے عناصر کی پہچان کرکے سزا دینے کا حکومت سے مطالبہ کیا ہے۔ وہیں کسان تنظیموں کے ذمہ داران سے بھی اس طرح کے لوگوں کو آندولن سے دور رکھنے کی اپیل کی ہے۔


زرعی قوانین کے خلاف کسان آندولن کے ساتھ شروعات سے ہی جڑے رہے گنگا جل برادری کے صدر ڈاکٹر میجر حمانشوں کا کہنا ہے کہ کسانوں کا یہ آندولن محض ایک دھرنا مظاہرہ نہیں بلکہ ستیہ گرہ ہے۔ یہ تحریک گزشتہ دو ماہ سے زیادہ وقت سے پُرامن طریقے سے جاری ہے۔ ایسے میں حکومت اس آندولن کو ختم کرنے کے لیے پہلے بھی کئی حربے استعمال کر چکی ہے لیکن کسانوں کا دھرنا مسلسل جاری ہے۔ ایسے میں 26 جنوری کے موقع پر اس طرح کے واقعہ کو انجام دینے کے لیے کسی سازش کا  کیا جانا کوئی حیرت کی بات نہیں ہے۔

Published by: Nadeem Ahmad
First published: Jan 28, 2021 08:34 AM IST