ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

میرٹھ : اس شخص نے لاک ڈاؤن کے برے اثرات سے لڑ کر تلاش کیا روزگار کا نیا ذریعہ 

لاک ڈاؤن کے سبب روزگار کا ذریعہ ختم ہونے کے بعد میرٹھ کے پروین نام کے اس شخص نے فیس ماسک اور ہینڈ سینیٹائزر فروخت کرنے کے ساتھ ہی گاڑیوں کو سینیٹائز کرنے کا بھی کام شروع کر دیا ہے۔

  • Share this:
میرٹھ : اس شخص نے لاک ڈاؤن کے برے اثرات سے لڑ کر تلاش کیا روزگار کا نیا ذریعہ 
میرٹھ : اس شخص نے لاک ڈاؤن کے برے اثرات سے لڑ کر تلاش کیا روزگار کا نیا ذریعہ 

میرٹھ ۔ کورونا وبا کے خطرے نے جہاں روزگار اور کاروبار کو بری طرح متاثر کیا ہے وہیں ان حالات میں لوگوں نے روزگار کے نئے مواقع تلاش کر لئے ہیں اور نئے ذریعے بھی پیدا کیے ہیں۔ کورونا انفیکشن سے بچاؤ کے لیے فیس شیلڈ گلوز ماسک  اور سینیٹائزر کا استعمال بڑھنے سے ان چیزوں کے کاروبار میں بھی اضافہ ہوا ہے۔


لاک ڈاؤن کے سبب روزگار کا ذریعہ ختم ہونے کے بعد میرٹھ کے پروین نام کے اس شخص نے فیس ماسک اور ہینڈ سینیٹائزر فروخت کرنے کے ساتھ ہی گاڑیوں کو سینیٹائز کرنے کا بھی کام شروع کر دیا ہے۔ سڑک کنارے کینوپی لگا کر پروین گاڑیوں کو سینیٹائز کرکے روزی روٹی کمانے کا انتظام کر رہے ہیں۔ گاڑیوں کا اس طرح سینیٹائز کرنے کا یہ طریقہ بھی لوگوں کو خوب پسند آ رہا ہے۔ میرٹھ میں رہنے والے پروین بتاتے ہیں کہ ان کا دواؤں کی سپلائی کا کام تھا جو کہ لاک ڈاؤن سے پہلے تک بہت اچھا چل رہا تھا لیکن لاک ڈاؤن کے دوران کام بند ہو گیا اب لاک ڈاؤن ختم ہونے کے باوجود کاروبار پھر سے شروع نہیں ہو سکا ہے اور نہ ہی ابھی شروع ہونے کی امید ہے۔ ان حالات میں بیوی بچوں کا پیٹ پالنے کے لئے ان کے پاس کوئی اور کام نہیں تھا تو سینیٹائزر فروخت کرنے کا کام شروع کر دیا۔


پروین کے مطابق اسی وقت ان کے ذہن میں یہ نیا آئیڈیا آیا کہ کیوں نہ گاڑیوں کو بھی سنیٹائز کرنے کا کام شروع کیا جائے اور پھر پروین نے اسپرے مشین خرید کر گاڑیوں کو بھی سینیٹایز کرنے کا کام شروع کر دیا ہے۔ گاڑیوں کو سینیٹائز کرنے کی یہ نئی ترکیب کام کر گئی اور روزگار کا ایک نیا سلسلہ شروع ہو گیا۔ پروین بتاتے ہیں کہ اب وہ دن بھر میں آٹھ سے دس گاڑیوں کو سینیٹائز کرکے ڈھائی سے تین سو روپے اضافی رقم حاصل کر لیتے ہیں۔

First published: Jun 25, 2020 09:01 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading