உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں وکشمیر : خون خرابہ بند کرکے پھر بات چیت کریں ہندوستان اور پاکستان : محبوبہ مفتی

    محبوبہ مفتی ۔ فائل فوٹو

    محبوبہ مفتی ۔ فائل فوٹو

    جموں وکشمیر میں جمعہ کی نماز کے بعد بھڑکا تشدد ختم ہونے کا نام نہیں لے رہا ہے۔ کشمیر میں شہریوں اور سیکورٹی فورسیز کے درمیان تصادم جاری ہے۔

    • Share this:
      سری نگر : جموں وکشمیر میں جمعہ کی نماز کے بعد بھڑکا تشدد ختم ہونے کا نام نہیں لے رہا ہے۔ کشمیر میں شہریوں اور سیکورٹی فورسیز کے درمیان تصادم جاری ہے۔ اس درمیان جموں و کشمیر کی وزیر اعلی محبوبہ مفتی نے دہشت گردی کی راہ پر چل پڑے لوگوں سے ہتھیار چھوڑنے کی اپیل کی ہے۔
      محبوبہ مفتی نے ایک پروگرام میں لوگوں سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ سیکورٹی فورسیز پر حملہ کرنے سے کچھ حاصل نہیں ہوگا ۔ فوج یا سی آر پی ایف کے جو جوان کشمیر میں آتے ہیں وہ غریب ریاستوں سے ہوتے ہیں ، ان پر حملہ کرنے سے کچھ حاصل نہیں ہوگا۔
      وزیر اعلی نے کشمیری عوام کو خطاب کرتے ہوئے کہا کہ امن میں راستہ ہے ۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ ہندوستان اور پاکستان کے ڈی جی ایم او کو ایک مرتبہ پھر آپس میں بیٹھ کر بات چیت کرنی چاہئے اور یہ خون خرابہ بند کردینا چاہئے ۔
      محبوبہ مفتی نے صحافیوں سے کہا کہ سرحدپر جنگ بندی کی خلاف ورزی بدقسمی کی بات ہے اور یہ ڈی جی ایم او کی سطح پر بات چیت کے بعد ہوا ہے ، ایسا نہیں ہونا چاہئے تھا ، دونوں طرف کے لوگوں کی جانیں جارہی ہیں ۔ دونوں ممالک کو اس معاملہ پر بات چیت کرنی چاہئے اور سرحد پر گولہ باری بند ہونی چاہئے۔
      First published: