உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    می ٹومہم: خاتون صحافی کے خلاف عدالت پہنچے ایم جے اکبر، ہتک عزت کا مقدمہ

    مرکزی وزیرمملکت برائے خارجہ امور ایم جے اکبر: فائل فوٹو

    مرکزی وزیرمملکت برائے خارجہ امور ایم جے اکبر: فائل فوٹو

    ایم جے اکبرنے دہلی کے پٹیالہ ہاوس کورٹ میں مقدمہ دائرکیا ہے۔ مجرمانہ ہتک عزت میں آئی پی سی کی دفعہ 499 اور 500 کے تحت دوسال تک کی سزا کی تجویز ہے۔ 

    • Share this:
      می ٹو مہم کے الزامات میں پھنسے مرکزی وزیرمملکت برائے خارجہ امور ایم جے اکبر نے ایک خاتون صحافی کے خلاف مجرمانہ ہتک عزت کا مقدمہ کیا ہے۔ انہوں نے دہلی کے پٹیالہ ہاوس کورٹ میں مقدمہ دائرکیا ہے۔ واضح رہے کہ ہتک عزت معاملے میں آئی پی سی کی دفعہ 499 اور 500 کے تحت دو سال کی سزا کی تجویز ہے۔

      ایم جے اکبراتوارکو ہی نائجیریا سے ہندوستان لوٹے ہیں۔ ہندوستان لوٹنے کے بعد انہوں نے خود پرلگے الزامات کو جھوٹااورمن گھڑت قرار دیا ہے۔ گزشتہ روز انہوں نے اس معاملے پر خاموشی توڑی تھی۔ تاہم یہ بھی خبریں آرہی تھیں کہ ایم جے اکبرنے پی ایم او کو اپنا استعفیٰ بھیج دیا ہے۔ حالانکہ یہ خبرافواہ ثابت ہوئی اوروہ اپنے عہدے پربنے ہوئے ہیں۔

      واضح رہے کہ ایم جے اکبرپرتقریباً 15 خاتون صحافیوں نے جنسی استحصال اوربدسلوکی کے الزامات عائد کئے ہیں۔ ان الزامات کو سیاسی قراردیتے ہوئے ایم جے اکبرنے کہا کہ آئندہ سال ہونے والےالیکشن کی وجہ سے ان پراس طرح کے الزامات عائد کئے جارہے ہیں۔ اس طرح کے الزامات سامنے آتے ہی اپوزیشن پارٹیاں مسلسل اکبرکے استعفیٰ کا مطالبہ کررہی ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں:          جنسی استحصال کے الزامات پر ایم جے اکبر نے توڑی خاموشی ، کہا : سبھی الزامات بے بنیاد ، کروں گا قانونی کارروائی

      یہ بھی پڑھیں:         جنسی استحصال کے الزامات سے گھرے ایم جے اکبر کی وطن واپسی، کہا- الزامات پر بعد میں دوں گا جواب 

      یہ بھی پڑھیں:    کانگریس نے کہا : ایم جے اکبر اطمینان بخش جواب دیں ، نہیں تو استعفی دیں

      یہ بھی پڑھیں:                                 ایم جے اکبر کے استعفی کی خبریں افواہ: سرکاری ذرائع

      یہ بھی پڑھیں:    اب مرکزی وزیرایم جے اکبرپرلگا جنسی استحصال کا الزام، سشما سوراج نے خاموشی اختیارکی
      First published: