உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    منی بھگدڑ: شہید ہونے والے ہندستانی حاجیوں کی تعداد 100 سے متجاوز، 32 ہنوز لاپتہ

    نئی دہلی: اس سال حج میں رمی جمرات کے مرحلے میں بھگدڑ میں شہید ہونے والے حاجیوں میں ہندستانی حاجیوں کی تعداد اب 100 سے تجاوز کرگئی ہے۔

    نئی دہلی: اس سال حج میں رمی جمرات کے مرحلے میں بھگدڑ میں شہید ہونے والے حاجیوں میں ہندستانی حاجیوں کی تعداد اب 100 سے تجاوز کرگئی ہے۔

    نئی دہلی: اس سال حج میں رمی جمرات کے مرحلے میں بھگدڑ میں شہید ہونے والے حاجیوں میں ہندستانی حاجیوں کی تعداد اب 100 سے تجاوز کرگئی ہے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی: اس سال حج میں رمی جمرات کے مرحلے میں بھگدڑ میں شہید ہونے والے حاجیوں میں ہندستانی حاجیوں کی تعداد اب 100 سے تجاوز کرگئی ہے۔ اس بات کی اطلاع وزیر خارجہ سشما سوراج نے ٹوئٹ کرکے دی ہے۔ 32 ہندستانی حاجیوں کا اب بھی کوئی پتہ نہیں چل سکا ہے۔


      محترمہ سوراج نے ٹوئٹر پر کہاہے کہ شہید ہونے والے ہندوستانی حاجیوں کی تعداد اب 101 ہو گئی ہے۔وزارت خارجہ کے ترجمان وکاس سوروپ نے قبل ازیں کہا تھا کہ خارجی امور کے وزیر مملکت وی کے سنگھ رمی جمرات سانحہ کے بعد سے مستقل لا پتہ ہندوستانی حاجیوں کا پتہ لگانے کے سلسلے میں سعودی عرب میں موجود ہیں۔مسٹر سنگھ کو سعودی وزیر صحت نے ہرممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی ہے۔


      واضح رہے کہ گزشتہ ماہ حج میں رمی جمرات کے مرحلے میں اس وقت بھگدڑ مچ گئی تھی جب حاجیوں کی دو بڑی قطاریں مبینہ طور پر ایک دوسرے کے سامنے آ گئی تھیں۔ یہ سانحہ منی میں پانچ منزلہ جمرات پل کے پاس شیطان کو کنکریاں مارنے کی رسم کے دوران پیش آیا تھا۔


      سال رواں فریضہحج کی ادائیگی کے دوران رمی جمرات کے دوران بھگدڑ دوسرا بڑاجان لیوا واقعہ تھا۔ قبل ازیں 11 ستمبر کو مکہ مکرمہ میں مسجد حرام کے احاطے میں ایک کرین کے گر نے سے اس کی زد میں آکر 100 سے زیادہ عازمین حج شہید ہو گئے تھے۔اس افسوسناک حادثے میں بھی گیارہ ہندستانی عازمیں حج شہید ہوئے تھے۔


      اس دوران فریضہ حج کی ادائیگی کے بعد ہندستانی حاجیوں کی واپسی کا سلسلہ جاری ہے۔ یہ سلسلہ رواں مہینے کے وسط تک جاری رہ سکتا ہے۔

      First published: