உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ملک کے معاشی نظام کو بی جے پی نے کردیا تہس نہس : منموہن سنگھ

    سابق وزیراعظم منموہن سنگھ نے وزیرا عظم نریندر مودی اور بی جے پی کی معاشی پالیسیوں پر سخت تنقید کرتے ہوئے آج کہا کہ ملک کا معاشی نظام تہس نہس ہوگیا ہے

    سابق وزیراعظم منموہن سنگھ نے وزیرا عظم نریندر مودی اور بی جے پی کی معاشی پالیسیوں پر سخت تنقید کرتے ہوئے آج کہا کہ ملک کا معاشی نظام تہس نہس ہوگیا ہے

    سابق وزیراعظم منموہن سنگھ نے وزیرا عظم نریندر مودی اور بی جے پی کی معاشی پالیسیوں پر سخت تنقید کرتے ہوئے آج کہا کہ ملک کا معاشی نظام تہس نہس ہوگیا ہے

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی : سابق وزیراعظم منموہن سنگھ نے وزیرا عظم نریندر مودی اور بی جے پی کی معاشی پالیسیوں پر سخت تنقید کرتے ہوئے آج کہا کہ ملک کا معاشی نظام تہس نہس ہوگیا ہے جس کی وجہ سے پچھڑے طبقوں، غریبوں، کسانوں، غیرمنظم سیکٹر کے مزدوروں اور نوجوانوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ڈاکٹر سنگھ نے یہاں کانگریس کے 84ویں سیشن کے دوسرے دن اپنے خطاب میں کہا کہ  سونیا گاندھی کی قیادت میں متحدہ ترقی پسند محاذ (یوپی اے) حکومت نے معاشی نرم کاری کا فائدہ عام لوگوں تک پہنچانے کے لئے کئی پالیسیاں وضع کیں اور ان کے مطابق قانون بنائے جس میں غذا، تعلیم اور اطلاع کا قانون خاص طور پر شامل ہیں۔
      بی جے پی پر وعدے پورے نہ کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے سابق وزیراعظم نے کہا کہ وہ صرف جملوں کی بنیاد پر حکومت چلارہے ہیں۔ کسانوں کی آمدنی دوگنا کرنے کے وعدہ کو جملہ قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ دو کروڑ لوگوں کو روزگار کے مواقع فراہم کرنے کا وعدہ کیا گیا تھا لیکن دو لاکھ لوگوں کو بھی روزگار نہیں ملا۔
      سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ نے مودی حکومت پر جموں و کشمیر میں حالات خراب کرنے کا الزام لگاتے ہوئے آج کہا کہ ہم کو پڑوسی ملکوں کے ساتھ بہتر تعلقات بنانے چاہئے۔انہوں نے کہا کہ مودی حکومت کی پالیسیوں کی وجہ سے کشمیر میں حالات بہت خراب ہوگئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اتنے خراب حالات تاریخ میں کبھی نہیں تھے۔ ریاست میں حالات دن بدن خراب ہورہے ہیں۔ اس کی وجہ سے ملک کی سرحدیں محفوظ نہیں ہیں اور ملک کی داخلی سلامتی کو بھی خطرہ لاحق ہے۔
      سابق وزیراعظم نے کہا کہ سرحد پار سے پاکستان کے ذریعہ کی جانے والی دہشت گردانہ سرگرمیاں قطعی برداشت نہیں کی جا سکتیں۔ حکومت کو اس سے مجموعی طور پر نمٹنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ مودی حکومت کے اقتدار میں آنے کے بعد سبھی پڑوسی ملکوں کے ساتھ تعلقات میں کشیدگی پیدا ہوئی ہے۔ حکومت کو چین سمیت سبھی پڑوسی ملکوں سے تعلقات میں بہتری لانی چاہئے۔
      First published: