உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کورنٹائن سمیت عمرہ کیلئے سعودی عرب کی پابندیوں کاحل نکالے مودی حکومت

    سعودی عرب کے ذریعہ عمرہ کیلئے جاری کی گئی گائڈ لائن میں ہندستان سمیت نو ممالک پر کورنٹائن قرنطینہ کی پابندی عائد کی گئی ہے جس کو لے کر کئی ہندستانی اراکین پارلیمنٹ نے تشویش اور تحفظات کا اظہار کیا ہے۔

    سعودی عرب کے ذریعہ عمرہ کیلئے جاری کی گئی گائڈ لائن میں ہندستان سمیت نو ممالک پر کورنٹائن قرنطینہ کی پابندی عائد کی گئی ہے جس کو لے کر کئی ہندستانی اراکین پارلیمنٹ نے تشویش اور تحفظات کا اظہار کیا ہے۔

    • Share this:
    سعودی عرب کے ذریعہ عمرہ کیلئے جاری کی گئی گائڈ لائن میں ہندستان سمیت نو ممالک پر کورنٹائن قرنطینہ کی پابندی عائد کی گئی ہے جس کو لے کر کئی ہندستانی اراکین پارلیمنٹ نے تشویش اور تحفظات کا اظہار کیا ہے اور حکومت ہند اور خاص طور سے وزارت اقلیتی امور سے اپیل کی ہے کہ وہ سعودی عرب سے اس مسئلہ کو حل کرنے کے لئے گفتگو کرکے حل نکالے ۔ آسام کی اپوزیشن پارٹی آل انڈیا یونائٹیڈ ڈیموکریٹک فرنٹ کے صدر اور رکن پارلیمنٹ مولانا بدرالدین اجمل نے نیوز18سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میری رائے ہے کہ مودی حکومت اس سلسلہ میں سعودی حکومت سے بات کرنا چاہئے۔

    انہوں نے کہا کہ اگر ہندستان سے عمر ہ کیلئے سعودی عرب جانے والوں کو ایک طویل عرصے تک کورنٹائن ہونا پڑتا ہے تو غریب افراد کے لئے ہی نہیں امیر افراد کے لئے مشکل عمل ہے اور اس سے جو اضافی مالی بوجھ پڑے گا اس کا سامنا کرناآسان نہیں ہے۔ بدرالدین اجمل نے کہا کہ وزارت حج کو اس سلسلے میں سعودی حکومت سے با ت کرکے مسئلہ کا حل نکالنا چاہئے۔



    سعودی حکومت اپنے یہاں پر بھی کورنٹائن کرنے کا فیصلہ کرسکتی ہے اس کے علاوہ ہندستان حکومت بھی اپنے ملک میں ایسے لوگوںکو کورنٹائن کی سہولت فراہم کراسکتی ہے ۔نیز اگر کسی تیسرے ملک میں کورنٹائن ہونا ہے تو اس کیلئے حکومت کو انتظام کرنا چاہیے ۔جبکہ لکشدیپ کے رکن پارلیمنٹ محمد فیضل نے کہا کہ انھوں سے اس سے قبل حکومت اس سے ملتے جلتے معاملے میں خط لکھا تھا کیونکہ گلف ممالک جانے والوں کو دقتوں کاسامنا کرنا پڑرہاتھا اور ان کو کورنٹائن قرنطینہ کرنا کافی مشکل ہورہاتھا ۔



    محمد فیضل نے کہا کہ سعودی حکومت سے بات کی جانی چاہیے ۔ عامرین کا کسی تیسرے ملک میں 14دنوں تک رہنا کافی دقت طلب معاملہ ہے انھوںنے کہا کہ جب تمام لوگ جو عمرہ کے لئے جائیں گے تو ان کو ویکسنیشن کی دونوں خوراک لگی ہوں گی تو ہندستان میں یا پھر سعودی عرب میں قرنطینہ کرائے جانے کی گنجائش ہے اسلئے حکومت کو بات کرکے مسئلہ کا حل نکالنا چاہیے ۔

    سعودی عرب کی عمرے کے لیے گائیڈ لائن اور شرائط
    حال ہی میں سعودی حکومت نے عمرہ کے لئے 10اگست سے سعودی عرب کے دروازے کھولے ہیں تاہم عمرہ کیلئے جانے والوں کیلئے گائڈ لائن کے تحت کئی شرائط عائد کی گئی ہیں جن میں کرونا ویکسین کی دونوں خوراکوں کا لگاہونا ، عمرہ کیلئے آنے والوں کی عمر 18سال کم از کم ہونا نیز 9ممالک ہندستان ،پاکستان ، انڈونیشیا، بنگلہ دیش ، ترکی وغیرہ سے آنے والوں افراد پر یہ شرط بھی لگائی گئی ہے کہ وہ تمام شرائط کے ساتھ ساتھ کسی ملک میں 14دنوں کا کورنٹائن قرنطینہ پورا کریں گے تبھی سعودی عرب میں داخلہ کی اجازت ہوگی اس کے لئے علاوہ رجسٹریشن سے لے کر تمام رہنماءخطوط پر عمل کرنا ہوگا ۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: