ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

مودی سرکارنے دی ریکارڈ 4 گنا طالبات کواسکالر شپ، پھر بھی 40 فیصد طالبات محروم

نئی دہلی: اقلیتی طالبات پر مودی حکومت مہربان ہوگئی ہے۔ پورے ملک کی اقلیتی طلبا کو تعلیم کے میدان میں آگے بڑھانے کے لئے چلائی جارہی مرکزی حکومت کی بیگم حضرت محل نیشنل اسکالر شپ دینے میں اس بار ریکارڈ اضافہ درج کیاگیاہے۔

  • Share this:
مودی سرکارنے دی ریکارڈ 4 گنا طالبات کواسکالر شپ، پھر بھی 40 فیصد طالبات محروم
نئی دہلی: اقلیتی طالبات پر مودی حکومت مہربان ہوگئی ہے۔ پورے ملک کی اقلیتی طلبا کو تعلیم کے میدان میں آگے بڑھانے کے لئے چلائی جارہی مرکزی حکومت کی بیگم حضرت محل نیشنل اسکالر شپ دینے میں اس بار ریکارڈ اضافہ درج کیاگیاہے۔

نئی دہلی: اقلیتی طالبات پر مودی حکومت مہربان ہوگئی ہے۔ پورے ملک کی اقلیتی طلبا کو تعلیم کے میدان میں آگے بڑھانے کے لئے چلائی جارہی مرکزی حکومت کی بیگم حضرت محل نیشنل اسکالر شپ دینے میں اس بار ریکارڈ اضافہ درج کیاگیاہے۔ اس سال ریکارڈ ایک لاکھ 32 ہزار طالبات کو اسکالر شپ ملی ہے۔ یہ تعداد اس لحاظ سے بہت اہم ہے کیونکہ گذشتہ 17-2016 میں محض 34ہزار طالبات کو اسکالر شپ دی گئی تھی۔


واضح رہے کہ یہ اسکالرشپ مولانا آزاد فائونڈیشن کی طرف سے دی جاتی ہے۔ اس اسکالر شپ کانام بیگم حضر محل نیشنل اسکالر شپ ہے۔ مولانا آزاد فائونڈیشن کی عمارت جو بوسیدہ حال نظر آتی ہے، لیکن یہاں سے پورے ملک کے طلبا وطالبات کو اسکالر شپ دی جاتی ہے۔ یہ اسکالر شپ 11 ویں جماعت اور 12 ویں جماعت کے ساتھ 10 ویں کلاس کی طالبات کو بھی دی گئی تھی۔


گذشتہ سال 17-2016 میں 34000 طالبات کو اسکالر شپ دی گئی تھی، تو اس سے 1،32،000 طالبات کو اسکالر شپ دی گئی ہے۔ حالانکہ اتنی بڑی تعداد میں اسکالر شپ دیئے جانے کے باوجود بھی اسکالر شپ کے لئے درخواست دینے والی 40 فیصد طالبات کو اسکالر شپ نہیں مل سکی ہے۔ کیونکہ 2 لاکھ 15 ہزار طالبات نے اسکالر شپ کے لئے درخواستیں دی تھی۔


 

واضح رہے کہ بیگم حضرت محل نیشنل اسکالر شپ کے تحت 9 ویں اور 10 ویں میں تعلیم حاصل کرنے والی اقلیتی طالبات کو 5-5 ہزار اور 11 ویں اور 12 ویں میں تعلیم حاصل کررہی طالبات کو 6-6  ہزار روپئے کی اسکالر شپ دی جاتی ہے۔ گذشتہ سال اسکالر شپ پر 21 کروڑ روپئے خرچ کئے گئے تھے، اس سال 74 کروڑ روپئے خرچ کئے گئے ہیں، لیکن گرلس ایجوکیشن سے منسلک لوگ مانتے ہیں، جو اسکالر شپ کی رقم کی جارہی ہے، وہ کم ہے اور سالوں سے چلی آرہی رقم کو اس کو 10000کیاجانا چاہئے۔

مولانا آزاد فائونڈیشن ایجوکیشن فائونڈیشن 1500 کروڑ کے کارپرس فنڈ سے اسکالر شپ دیتا ہے۔ گذشتہ سال اسکالر شپ بجٹ 70 کروڑ تھا جس کو بڑھا کر 80 کروڑ کیا گیا ہے۔ مودی حکومت پر اپوزیشن اقلیت مخالف ہونے کا الزام لگاتا رہا ہے، ایسے میں اقلیتی طالبات کو تعلیم کے لئے جاری کی گئی اسکالر شپ کا یہ پیسہ یقیناً سرکار کی شبیہ تھوڑی بہتر ہوسکتی ہے۔

خرم شہزاد کی رپورٹ

 

 
First published: Apr 26, 2018 10:55 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading