உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    روہنگیا مسلمانوں کے معاملہ میں پیر کو سپریم کورٹ میں حلف نامہ داخل کرے گی مودی حکومت

    ملک میں غیر قانونی طریقے سے رہنے والے روہنگیا مسلمانوں کو واپس بھیجنے کے معاملے میں مرکزی حکومت پیر کو سپریم کورٹ میں حلف نامہ داخل کرے گی۔

    ملک میں غیر قانونی طریقے سے رہنے والے روہنگیا مسلمانوں کو واپس بھیجنے کے معاملے میں مرکزی حکومت پیر کو سپریم کورٹ میں حلف نامہ داخل کرے گی۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی : ملک میں غیر قانونی طریقے سے رہنے والے روہنگیا مسلمانوں کو واپس بھیجنے کے معاملے میں مرکزی حکومت پیر کو سپریم کورٹ میں حلف نامہ داخل کرے گی۔ مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے آج یہاں ایک پروگرام کے دوران نامہ نگاروں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی حکومت سپریم مورٹ میں اٹھارہ ستمبر کو حلف نامہ داخل کرے گی۔
      خیال رہے کہ مرکزی حکومت نے میانمار میں ظلم و زیادتی سے بچنے کے لئے ہندوستان میں آئے روہنگیا مسلمانوں کو واپس بھیجنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ گذشتہ جولائی میں حکومت کے اس اعلان کے بعد روہنگیا مسلمانوں نے سپریم کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا تھا۔ عدالت نے مزکزی حکومت سے اس معاملے پر حلف نامہ داخل کرنے کے لئے کہا تھا۔
      حکومت کئی مرتبہ واضح کرچکی ہے کہ روہنگیا مسلمان غیر قانونی طریقے سے ملک میں رہ رہے ہیں اور ان سے سلامتی کو خطرہ ہے اس لئے مناسب طریقہ کار اپناکر واپس ان کے وطن بھیجا جائے گا۔ حکومت کو خدشہ ہے کہ مختلف دہشت گرد گروپ انہیں گمراہ کرکے دہشت گردانہ سرگرمیوں میں شامل کرسکتے ہیں۔ مرکز نے ریاستی حکومتوں سے کہا ہے کہ روہنگیا لوگوں کی شناخت کی جائے جس سے انہیں ان کے ملک واپس بھیجا جاسکے۔
      First published: