உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    آگسٹا پر پارلیمنٹ میں گھمسان، کانگریس۔ ترنمول کانگریس ممبران پارلیمنٹ آمنے سامنے، مودی نے کی میٹنگ

    نئی دہلی۔ آگسٹا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر ڈیل میں سیاسی گہما گہمی کا دور جاری ہے۔

    نئی دہلی۔ آگسٹا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر ڈیل میں سیاسی گہما گہمی کا دور جاری ہے۔

    نئی دہلی۔ آگسٹا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر ڈیل میں سیاسی گہما گہمی کا دور جاری ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی۔ آگسٹا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر ڈیل میں سیاسی گہما گہمی کا دور جاری ہے۔ آج اسے لے کر وزیر اعظم نریندر مودی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ اور وزیر دفاع منوہر پاریکر کے ساتھ ملاقات کر رہے ہیں۔ وہیں ٹی ایم سی نے اس پر بحث کو لے کر پارلیمنٹ میں نوٹس دیا۔

      پارلیمنٹ شروع ہوتے ہی راجیہ سبھا میں اس پر جم کر ہنگامہ مچا۔ کانگریس اور ٹی ایم سی کے ایم پی ویل تک آکر ہنگامہ کرنے لگے۔ ٹی ایم سی نے رشوت خوری کا مسئلہ اٹھاتے ہوئے وزیر دفاع منوہر پاریکر سے جواب دینے کی مانگ کی۔ ٹی ایم سی ممبران پارلیمنٹ نے پوچھا کہ وزیر دفاع بتائیں کس کس نے رشوت لی ہے۔

      وہیں کانگریس نے گجرات کی سی اے جی رپورٹ کی بحث کو لے کر ہنگامہ کیا۔ جبکہ ٹی ایم سی کے سكھیندو نے پوچھا کہ سگنورا گاندھی کون ہے، اے پی کون ہے، ششی كانت کون ہے۔ وزیر دفاع بیٹھے ہیں، وہ جواب دیں کہ دلالی کا پیسہ کس نے کھایا۔ چیئرمین سمجھاتے رہے لیکن ممبران نہیں مانے۔ اس کے بعد راجیہ سبھا کو 12.30 بجے تک کے لئے ملتوی کر دیا گیا۔

      ادھر، وینکیا نائیڈو نے آج کہا کہ حکومت شروع سے کہہ رہی ہے کہ ہم بحث کے لئے تیار ہیں۔ وزیر جی اپنے حقائق سامنے رکھیں گے اور تاریخ اور پورا سچ سامنے آئے گا۔ آج آپ نے اخبار میں پڑھا ہوگا کہ انٹونی جی نے خود کہا ہے کہ کوئی بلیک لسٹ نہیں کیا۔ پوری حقیقت پر آرام سے بحث کرنا چاہئے۔ جن لوگوں نے پیسہ لیا انڈیا میں وہ لوگ کہاں ہیں یہ دیکھنا پڑے گا۔ اس میں سیاست نہیں ہونی چاہئے۔ حقائق سامنے آنے چاہئیں۔ پارلیمنٹ کا گھیراؤ کرنا مناسب نہیں ہے۔

      وہیں ترنمول کانگریس ممبر پارلیمنٹ ڈیریک او برائن نے کہا کہ ہم آگسٹا پربحث چاہتے ہیں۔ بڑا مسئلہ ہے۔ پارلیمنٹ میں ہم نے نوٹس دیا ہے۔
      First published: