உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مرکزی وزراء اور متعدد شعبوں کے سکریٹریوں سے پی ایم مودی کی ’’اہم‘‘ ملاقات، کیا ہوگی خاص گفتگو؟

    وزیر اعظم نریندر مودی (Narendra Modi)

    وزیر اعظم نریندر مودی (Narendra Modi)

    معاشی تجزیہ نگاروں کے مطابق کئی ریاستوں کے انتخابات کے ساتھ ساتھ 2024 میں ہونے والے عام انتخابات سے قبل حکومت پر سیاسی دباؤ بھی بڑھ رہا ہے۔ اپوزیشن جماعتیں مہنگائی میں اضافے اور ایندھن کی بڑھتی ہوئی قیمتوں بشمول کھانا پکانے والی گیس کے مسائل پر حکومت کو نشانہ بنا رہی ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | Mumbai | Hyderabad | Jammu | Gujarat
    • Share this:
      باوثوق ذرائع کے مطابق وزیر اعظم نریندر مودی (Narendra Modi) اس ماہ کے آخر میں وزراء کی کونسل اور تمام سیکرٹریوں سے معیشت اور تجارت کے مسائل پر بات کرنے کے لیے ملاقات کریں گے۔ ذرائع کے مطابق یہ میٹنگ انتہائی اہمیت کی حامل ہے کیونکہ یہ عالمی بینک کی تازہ ترین رپورٹ کے پس منظر میں ہونے والی ہے۔

      عالمی بینک کی تازہ ترین رپورٹ کے مطابق مرکزی بینکوں کی جانب سے مالیاتی پالیسیوں کے بارے میں از سر نو غور و فکر کرنے کی ضرورت ہے کیونکہ دنیا کو اگلے سال کساد بازاری کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ اسی ضمن میں ہی ایم مودی کی یہ میٹنگ ہوگی۔ معیشت اور تجارت پر اس میٹنگ کی اہمیت بڑھ گئی ہے۔

      عہدیدار نے کہا کہ اگلے عام انتخابات میں صرف 20 ماہ رہ گئے ہیں، اجلاس کا مقصد ترجیحی علاقوں اور سیاسی کاموں کی نشاندہی کرنا ہے۔ 28 یا 30 ستمبر کو ہونے والی اس میٹنگ میں دونوں شعبوں کے نتائج کا جائزہ لینے کا امکان ہے۔ اس دوران نئی سرمایہ کاری کو مزید فروغ دینے کے لیے نئے اہداف اور ڈیڈ لائن بھی طے کیے جائیں گے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      نظام دکن میر عثمان علی خان کی جانب سے ہندوستانی حکومت کو 5,000 کلو سونا کاعطیہ

      دوسرے اہلکار نے کہا کہ تمام شرکاء کو زبانی طور پر مطلع کر دیا گیا ہے، لیکن دو اہم موضوعات پر آزادانہ گفتگو کو یقینی بنانے کے لیے ابھی تک میٹنگ کا کوئی ایجنڈا جاری نہیں کیا گیا ہے۔ ایک اور بڑھتا ہوا مسئلہ خوردہ افراط زر ہے جو اگست میں بڑھ کر 7 فیصد ہو گیا ہے۔ یہ لگاتار آٹھواں مہینہ ہے، جب کنزیومر پرائس انڈیکس 6 فیصد کے نشان سے اوپر رہا، جو کہ ریزرو بینک آف انڈیا (RBI) کی انڈیکس سے بڑھ کر ہے۔

      یہ بھی پڑھیں: 

      سروے کی مخالفت میں دارالعلوم دیوبند میں آج بڑی کانفرنس،250 سے زائد آپریٹرس لیں گے حصہ

      معاشی تجزیہ نگاروں کے مطابق کئی ریاستوں کے انتخابات کے ساتھ ساتھ 2024 میں ہونے والے عام انتخابات سے قبل حکومت پر سیاسی دباؤ بھی بڑھ رہا ہے۔ اپوزیشن جماعتیں مہنگائی میں اضافے اور ایندھن کی بڑھتی ہوئی قیمتوں بشمول کھانا پکانے والی گیس کے مسائل پر حکومت کو نشانہ بنا رہی ہیں۔ دوسرے عہدیدار نے کہا کہ تازہ سرمایہ کاری کو راغب کرنے اور میک ان انڈیا پروگرام کے تحت گھریلو پیداوار کی کوششوں کو زندہ کرنے کے مزید طریقوں پر بھی بات چیت کا امکان ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: