ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

رام مندر کی جلد تعمیر سے ہندو- مسلم اتحاد مضبوط ہوگا: موہن بھاگوت

آر ایس ایس کے لیڈر کی حیثیت سے میرا کہنا ہے کہ رام جنم بھومی پرخوبصورت رام مندرجلد سے جلد بننا چاہئے۔

  • UNI
  • Last Updated: Sep 19, 2018 11:58 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
رام مندر کی جلد تعمیر سے ہندو- مسلم اتحاد مضبوط ہوگا: موہن بھاگوت
موہن بھاگوت: فائل فوٹو

نئی دہلی: راشٹریہ سویم سیوک سنگھ (آرایس ایس) نے آج کہا کہ اجودھیا میں بھگوان شری رام کی جنم بھومی پر رام مندر جلد سے جلد بننا چاہئے۔ ایسا ہونے سے ہندو اور مسلمانوں کے درمیان جھگڑے کی وجہ ختم ہو جائے گی اور فرقہ وارانہ اتحاد مضبوط ہوگا۔

آر ایس ایس کے سربراہ موہن بھاگوت نے یہاں وگیان بھون میں 'مستقبل کا ہندوستان : راشٹریہ سویم سیوک سنگھ کے نقطہ نظر' کے موضوع پر سہ روز ہ کانفرنس کے تیسرے اور آخری دن سوالات کے جوابات دیتے ہوئے کہا کہ اجودھیا کے معاملے میں آرڈیننس لانا چاہئے یا بات چیت ضروری ہے، یہ سوچنا حکومت کا کام ہے۔ آر ایس ایس کے لیڈر کی حیثیت سے وہ کہیں گے کہ رام جنم بھومی پر خوبصورت رام مندر جلد سے جلد بننا چاہئے۔

موہن بھاگوت نے کہا کہ اکثریت ہندو آبادی رام کو بھگوان مانتی ہے اور بہت سے لوگ انہیں طرزعمل میں اعلی معیار کی انسانی روایت کو اتارنے والے 'مریادا پروشوتم' کے طور پر دیکھتے ہیں اور متعدد لوگ انہیں 'امام ہند' شمار کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہاں لیزر سروے سے پتہ چل چکا ہے کہ متنازعہ مقام پرمندر تھا۔ اگر وہاں رام مندر بن جائے تو ہندو اور مسلمانوں کے درمیان جھگڑے کی بڑی وجہ ختم ہو جائے گی۔ اس کام کو اتنا لٹکانے کی ضرورت نہیں ہے۔ اسے جلد سے جلد کرنا چاہئے۔ 


یہ بھی پڑھیں:     گئورکشک گایوں کوگھرمیں رکھیں، اس نام پرلنچنگ قبول نہیں: موہن بھاگوت 

انہوں نے کہا کہ "جہاں رام کی جنم بھومی تھی، جہاں ان کی پیدائش ہو ئی، وہاں ان کا مندر ہونا چاہئے، اگر یہ ہو گیا تو ہندواورمسلمانوں کے درمیان جھگڑے کی ایک بڑی وجہ ختم ہو جائے گی اور یہ خیر سگالی سے ہو گیا تو مسلمانوں کی طرف اٹھنے والی انگلیوں میں بہت کمی آ جائے گی۔


یہ بھی پڑھیں:    آئین سب سے مقدم، 'ہندو راشٹر' میں مسلمانوں کے لئے بھی جگہ: موہن بھاگوت

 
First published: Sep 19, 2018 11:58 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading