உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    محض 4-5 ارکان پارلیمنٹ ہی پہنچے اسپیشل بس سے، کیجریوال حکومت نے بسیں واپس لے لیں

    نئی دہلی۔ دہلی حکومت نے طاق و جفت اسکیم کے دوران ممبران پارلیمنٹ کو پارلیمنٹ تک لانے لے جانے کے لئے ڈی ٹی سی کی خصوصی بس سروس چلائی ہے۔،

    نئی دہلی۔ دہلی حکومت نے طاق و جفت اسکیم کے دوران ممبران پارلیمنٹ کو پارلیمنٹ تک لانے لے جانے کے لئے ڈی ٹی سی کی خصوصی بس سروس چلائی ہے۔،

    نئی دہلی۔ دہلی حکومت نے طاق و جفت اسکیم کے دوران ممبران پارلیمنٹ کو پارلیمنٹ تک لانے لے جانے کے لئے ڈی ٹی سی کی خصوصی بس سروس چلائی ہے۔،

    • IBN Khabar
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی۔ دہلی حکومت نے طاق و جفت اسکیم کے دوران ممبران پارلیمنٹ کو پارلیمنٹ تک لانے لے جانے کے لئے ڈی ٹی سی کی خصوصی بس سروس چلائی، لیکن ممبران پارلیمنٹ کی جانب سے سرد ردعمل ملنے کے کچھ ہی گھنٹوں کے اندر اس نے زیادہ تر بسیں واپس لے لیں۔ پارلیمنٹ کے سیشن کو دیکھتے ہوئے دہلی حکومت نے ممبران پارلیمنٹ کو لانے لے جانے کے لئے 6 اسپیشل بسیں چلانے کا کل اعلان کیا تھا اور ان سے طاق وجفت اسکیم پر عمل کرنے کی اپیل کی تھی۔  ممبران پارلیمنٹ کو پارلیمنٹ پہنچانے کے لئے ڈی ٹی سی کی ' ایم پی اسپیشل ’ سروس کے پہلے دن صرف چار پانچ ممبران پارلیمنٹ نے اس کا فائدہ اٹھایا۔ ' ایم پی اسپیشل' بسیں صبح نو بجے سے 11 بجے تک اور شام ساڑھے پانچ بجے سے آٹھ بجے تک چلائی جانی تھیں۔

      دہلی کے وزیر ٹرانسپورٹ گوپال رائے نے کہا کہ حالانکہ آج کے تجربے کو دیکھتے ہوئے اور پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں سے منسلک حکام کے ساتھ مشاورت کے بعد یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ دو بسیں بنی رہیں گی اور باقی چار بسیں کل سے واپس لے لی جائیں گی۔ طاق وجفت اسکیم  پرعمل آوری کا آج صبح مشاہدہ کرنے کے لئے بس کی سواری کرنے والے رائے نے خبردار کیا کہ اگر ممبران پارلیمنٹ 'جان بوجھ کر' ان قوانین کی خلاف ورزی کرتے ہیں تو انہیں 'چھوڑا' نہیں جائے گا۔ اس سے پہلے دن میں وزیر ٹرانسپورٹ نے راجیہ سبھا کے چیئرمین حامد انصاری سے ملاقات کی اور اس بات پرگفتگو کی کہ ممبران پارلیمنٹ کس طرح پارلیمنٹ پہنچیں گے۔
      First published: