ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

اروناچل پردیش میں صدر راج نافذ، کابینہ کی سفارش پر صدر نے دی منظوری

نئی دہلی۔ صدرجمہوریہ پرنب مکھرجی نے اروناچل پردیش میں صدر راج نافذ کرنے کو آج منظوری دے دی۔

  • UNI
  • Last Updated: Jan 27, 2016 08:18 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
اروناچل پردیش میں صدر راج نافذ، کابینہ کی سفارش پر صدر نے دی منظوری
نئی دہلی۔ صدرجمہوریہ پرنب مکھرجی نے اروناچل پردیش میں صدر راج نافذ کرنے کو آج منظوری دے دی۔

نئی دہلی۔  صدرجمہوریہ  پرنب مکھرجی نے اروناچل پردیش میں صدر راج نافذ کرنے کو آج منظوری دے دی۔ سرکاری ذرائع نے یہاں بتایا کہ مسٹر مکھرجی نے اروناچل پردیش میں صدر راج نافذ کرنے کے سلسلے میں مرکزی کابینہ کی تجویز پر دستخظ کردئے۔ خیال رہے کہ ریاست میں آئینی بحران کے مدنظر گذشتہ اتوار کو مرکزی کابینہ کی میٹنگ میں صدر راج نافذ کرنے کی تجویز منظور کی گئی تھی اور اس کے بعد کابینہ کی یہ تجویز صدر جمہوریہ کے پاس بھیج دی گئی تھی۔


وزیر اعظم نریندر مودی کی رہائش گاہ پر ہوئی کابینہ کی ہنگامی میٹنگ میں صدر سے اروناچل پردیش میں صدر راج نافذ کرنے کی سفارش کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ میٹنگ میں ریاست میں جاری سیاسی بحران پر بات چیت کی گئی۔ ذرائع کے مطابق حکومت نے سیاسی بحران اور آئینی حیثیت پر اٹارنی جنرل مکل روہتگی سے مشورہ کیا۔ حکومت نے آخر کار فیصلہ کیا کہ اروناچل پردیش میں سیاسی بحران پیدا ہو گیا ہے اور اس میں مرکزی حکومت کی مداخلت کی ضرورت ہے۔


مسٹر تکی نے الزام لگایا کہ گورنر جیوتی پرساد راجکھووا بی جے پی کے ایجنٹ کے طور پر کام کر رہے ہیں اور انہوں نے وقت سے پہلے اسمبلی اجلاس بلا کران کی حکومت گرانے میں کانگریس کے باغی ممبران اسمبلی کی مدد کی۔ ریاستی حکومت نے اسمبلی کی عمارت کو سیل کر دیا تھا۔ گزشتہ برس 16 اور 17 دسمبر کو ایک ہوٹل میں بلائے گئے اسمبلی اجلاس میں بی جے پی اور آزاد ممبران اسمبلی کے ساتھ کانگریس کے باغی گروپ نے ریاستی حکومت کے خلاف عدم اعتماد کی تجویزمنظور کی تھی۔ اسمبلی کے اسپیکر نبام ریبیا نے اس فیصلے کو چیلنج کیا تھا لیکن گوہاٹی ہائی کورٹ نے عرضی مسترد کر دی تھی۔ اس کے بعد مسٹر ریبیا سپریم کورٹ پہنچے تھے جہاں آئینی بنچ کو یہ معاملہ سونپا گیا۔

First published: Jan 26, 2016 08:02 PM IST