ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

سماج وادی پارٹی کے وزیر اعلی عہدہ کے امیدوار نہیں ہوں گے اکھلیش: ملائم سنگھ نے دیا اشارہ

ملائم نے شیو پال یادو کے ساتھ پریس کانفرنس میں یہ بھی یاد دلایا کہ 2012 کے اسمبلی انتخابات میں ان کے نام پر ہی اکثریت ملی تھی لیکن انہوں نے سب کے کہنے پر اکھلیش یادو کو وزیر اعلی بنا دیا۔

  • IBN Khabar
  • Last Updated: Oct 25, 2016 05:04 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
سماج وادی پارٹی کے وزیر اعلی عہدہ کے امیدوار نہیں ہوں گے اکھلیش: ملائم سنگھ نے دیا اشارہ
ملائم نے شیو پال یادو کے ساتھ پریس کانفرنس میں یہ بھی یاد دلایا کہ 2012 کے اسمبلی انتخابات میں ان کے نام پر ہی اکثریت ملی تھی لیکن انہوں نے سب کے کہنے پر اکھلیش یادو کو وزیر اعلی بنا دیا۔

نئی دہلی۔ سماج وادی پارٹی کے صدر ملائم سنگھ یادو نے آج صاف کر دیا ہے کہ آنے والے اسمبلی انتخابات میں جیت ملنے پر وزیر اعلی کون بنے گا، اس کا فیصلہ نو منتخب ارکان اسمبلی ہی کریں گے۔ ملائم نے شیو پال یادو کے ساتھ پریس کانفرنس میں یہ بھی یاد دلایا کہ 2012 کے اسمبلی انتخابات میں ان کے نام پر ہی اکثریت ملی تھی لیکن انہوں نے سب کے کہنے پر اکھلیش یادو کو وزیر اعلی بنا دیا۔ گزشتہ دنوں برخاست کئے گئے وزراء کی کیا دوبارہ اکھلیش حکومت میں واپسی ہو گی؟ اس سوال پر ملائم نے کہا کہ اس کا فیصلہ وزیر اعلی کریں گے۔


ملائم سنگھ یادو آج میڈیا کے سامنے آئے تو ان کے ساتھ پارٹی کے ریاستی صدر شیو پال یادو بھی تھے۔ اس پریس کانفرنس میں وزیر اعلی اکھلیش یادو کو بھی آنا تھا تاکہ پارٹی اور خاندان کے متحد ہونے کا پیغام دیا جا سکے لیکن اکھلیش اس میں نہیں پہنچے۔ کانفرنس میں ملائم نے ایک لکھا ہوا بیان پڑھا کہ پارٹی اور خاندان مکمل طور پر متحد ہے اور جو لوگ شور مچا رہے ہیں ان کا کوئی مینڈیٹ نہیں ہے۔ کل دن بھر ہوئے ہنگامے اور شام کی میل-ملاقاتوں کے بعد لگ رہا تھا کہ سماج وادی پارٹی کے درمیان پیدا ہوئی دراڑ کو ملائم ختم کر دیں گے۔ لیکن آج ملائم نے اشاروں اشاروں میں کئی باتیں صاف کر دیں۔


ملائم سے جب پوچھا گیا کہ کیا دوبارہ حکومت بننے کی صورت میں بھی اکھلیش یادو ہی وزیر اعلی بنیں گے تو ملائم پہلے تو ٹھٹھكے، پھر بولے یہ تو اکثریت آنے پر ہی طے ہوگا۔ ہماری پارٹی جمہوری پارٹی ہے۔ ممبر اسمبلی چنے جائیں گے اور وہی طے کریں گے۔ یعنی اب تک پارٹی کے سینئر لیڈر بار بار جس طرح اکھلیش کے ہی وزیر اعلی كے امیدوار ہونے کی یقین دہانی کرا رہے تھے، اسے دہرانے سے ملائم نے صاف انکار کر دیا۔


ووٹ اکھلیش کو نہیں بلکہ مجھے ملا

جب ایک صحافی نے سوال کیا کہ کیا یہ سچ نہیں ہے کہ 2012 کے انتخابات میں آپ کے نام پر اکثریت ملی تھی لیکن آپ نے اکھلیش کو وزیر اعلی بنوا دیا تو ملائم نے حمایت کرتے ہوئے کہا کہ یہ بات درست ہے کہ 2012 میں اکثریت ہمارے نام پر ملی تھی لیکن سب کے کہنے پر ہم نے اکھلیش کو وزیر اعلی بنوا دیا۔

رام گوپال کی بات پر توجہ نہیں

پارٹی سے نکالے گئے رام گوپال یادو نے ملائم کے کل کے بیان کو پاگل پن سے تعبیر کیا تھا۔ جب ملائم سے اس بارے میں پوچھا گیا تو ان کا کہنا تھا کہ ان کی باتوں کو اب میں کوئی اہمیت نہیں دیتا۔

برخاست وزراء پر فیصلہ اکھلیش کریں گے

وزیر اعلی اکھلیش یادو کے ذریعہ برخاست کئے گئے وزیر کیا حکومت میں واپسی کریں گے؟ اس سوال پر ملائم نے کہا کہ یہ وزیر اعلی کا استحقاق ہے، وہ فیصلہ کریں گے۔

 
First published: Oct 25, 2016 05:04 PM IST