ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

دہلی اقلیتی کمیشن سے کی گئی اتراکھنڈ کے مسلم گاؤں کو اجاڑنے کی شکایت

اتراکھنڈ کے گاؤں مادھو پور حضرت پور تحصیل روڑکی ضلع ہریدوار کے محمد اسرار نے دہلی اقلیتی کمیشن کو اطلاع دی ہے کہ اتراکھنڈ کی حکومت ان کے گاؤں کے سبھی گھروں کو اجاڑنے جا رہی ہے۔

  • Share this:
دہلی اقلیتی کمیشن سے کی گئی اتراکھنڈ کے مسلم گاؤں کو اجاڑنے کی شکایت
اتراکھنڈ کے گاؤں مادھو پور حضرت پور تحصیل روڑکی ضلع ہریدوار کے محمد اسرار نے دہلی اقلیتی کمیشن کو اطلاع دی ہے کہ اتراکھنڈ کی حکومت ان کے گاؤں کے سبھی گھروں کو اجاڑنے جا رہی ہے۔

اتراکھنڈ کے گاؤں مادھو پور حضرت پور تحصیل روڑکی ضلع ہریدوار کے محمد اسرار نے دہلی اقلیتی کمیشن کو اطلاع دی ہے کہ اتراکھنڈ کی حکومت ان کے گاؤں کے سبھی گھروں کو اجاڑنے جا رہی ہے۔ یہ گاؤں تقریباً 300 سال پہلے آباد ہوا تھا اور گاؤں کے موجودہ باشندے انہیں اصل باشندوں کی اولاد ہیں جنہوں نے یہ گاؤں بسایا تھا۔ لیکن مقامی طور پر کوئی سنوائی نہیں ہورہی ہے تو گاؤں کے محمد اسرار نے دہلی اقلیتی کمیشن کو مدد کے لئے خط لکھا ہے۔


انگریزی ویب سائٹ کارواں میں شائع خبر کے مطابق، محمد اسرار نے خط لکھا  اور تمام گاوں والوں سے خط پر دستخط کروائے۔ واضح ہو کہ خط میں لکھا گیا ہے’’ہم  مادھو پور حضرت پور کے باشندہ ہیں۔ ہمارے گھروں کو تالاب کے پروجیکٹ کے لئے دے دیا گیا ہے جب کہ ہم لوگ یہاں نسلوں سے رہ رہے ہیں لیکن اب اتراکھنڈ حکومت ہمیں گھر خالی کرنے کے لئے ہمارے ساتھ زبردستی کر رہی ہے، اب ہم لوگ کہاں جائیں؟ ہم لوگ یہاں 200-300 سالوں سے رہ رہے ہیں‘‘۔قابل ذکر ہے کہ مبینہ طور پر خط میں یہ بھی لکھا گیا ہے کہ افسران نے لوگوں سے پیسے لئے ہیں۔


واضح ہوکہ یہ معاملہ دہلی اقلیتی کمیشن کےدائرہ اختیار سے باہر ہے۔ اس لئے کمیشن کے صدر ڈاکٹر ظفرالاسلام خان نے اپنی سفارش کے ساتھ نیشنل ہیومن رائٹس کمیشن اور قومی اقلیتی کمیشن کو خط لکھ کر اس معاملے میں دخل دینے کی گزارش کی ہے۔

First published: Jul 30, 2018 08:22 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading