ہوم » نیوز » امراوتی

جسٹس راجندر سچر کی وفات پر مسلم ملی تنظیموں اور سرکردہ شخصیات کی تعزیت

مسلمانوں کی زبوں حالی کی آئینہ دار دستاویز ’’سچر رپورٹ‘‘کے خالق جسٹس راجندر سچر کی موت پرمسلم ملی تنظیموں اور سرکردہ شخصیات نے تعزیت پیش کرتے ہوئے ان کی وفات کو ایک عہد کاخاتمہ بتایاہے۔

  • Share this:
جسٹس راجندر سچر کی وفات پر مسلم ملی تنظیموں اور سرکردہ شخصیات کی تعزیت
جسٹس راجندر سچر ۔ فائل فوٹو

نئی دہلی:  آزاد ہندستان میں مسلمانوں کی زبوں حالی کی آئینہ دار دستاویز ’’سچر رپورٹ‘‘کے خالق جسٹس راجندر سچر کی موت  پرمسلم  ملی تنظیموں اور سرکردہ شخصیات نے تعزیت پیش کرتے ہوئے ان کی وفات کو ایک عہد کاخاتمہ بتایاہے۔


جمعیۃ علمائ ہند کے جنرل سکریٹری مولانا محمود مدنی، ماہر اسلامیا ت اور مولانا آزاد یونیورسٹی ، جودھ پور کے وائس چانسلر پروفیسر اخترالواسع، جماعت اسلامی ہند کے جنرل سکریٹری  محمد سلیم انجینئر، ہیومن چین کے صدر انجینئر محمد اسلم علیگ نے گنگاجمنی تہذیب کا خسارہ قرار دیاہے۔


مولانا محمود مدنی نے کہاکہ آنجہانی راجندر سچر نے بحیثیت جج ملک کے عدلیہ کا وقار بلند کیا اور سبکدوش ہونے کے بعد مظلوم اور پسماندہ افراد کے حقوق کے لئے لڑتے رہے، وہ تادم واپسیں سول تحریکوں سے وابستہ رہے۔ 


پروفیسر اخترالواسع نے آج کہا کہ انسانی حقوق کے اس عظیم علمبردار نے اپنی متعلقہ رپورٹ سے مسلمانان ہند کی آئینہ داری ہی نہیں کی تھی بلکہ تشٹی کرن کے غبارے کی ہوا نکال دی تھی۔ انہوں نے  دہلی ہائی کورٹ کے سابق چیف جسٹس کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے تقسیم وطن کے نتیجے میں ہجرت کر نے پر مجبور آنجہانی سچر کو ہندستان کی مشترکہ تہذیب کا امانت دار، سوشلسٹ تحریک کی پیداوار اور بحیثیت جج قانون کا پاسدار قرار دیا۔

محمد سلیم انجینئر نے کہا کہ جسٹس راجندر سچر کی وفات سے ہمیں بہت افسوس ہوا ہے۔ ہم ان کے اہل خاندان کے لیے تعزیت پیش کرتے ہیں اور غم کی اس گھڑی میں ان کے ساتھ ہیں۔ جسٹس سچر یقیناً ایسی شخصیت کے مالک تھے جو غریبوں،. مجبوروں اور مظلوموں کے لیے بڑی ہم درد تھی۔ ملک کی اقلیتوں کے لیے ان کی عظیم خدمت سچر کمیٹی رپورٹ ہے، جس کے ذریعے سماجی، معاشی اور تعلیمی میدانوں میں ہندوستانی مسلمانوں کی حقیقی صورت حال سامنے آئی۔

انجینئر محمد اسلم علیگ نے  جسٹس راجندر سچرکے انتقال کو سیکولرزم اور گنگا جمنی تہذیب کا عظیم خسارہ قرار دیتے ہوئے کہاکہ اس وقت ہندوستان کو ان کی سخت ضرورت تھی۔
First published: Apr 20, 2018 07:19 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading