உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    فرسٹ پوسٹ ٹرسٹ سروے: نریندرمودی کو 63 فیصد لوگ دوبارہ دیکھنا چاہتے ہیں وزیراعظم

    فرسٹ پوسٹ ٹرسٹ سروے دو مارچ سے 22 مارچ کے درمیان 30 ریاستوں کے 31000 سے زیادہ لوگوں کا نمونہ لے کرکیا گیا ہے۔

    فرسٹ پوسٹ ٹرسٹ سروے دو مارچ سے 22 مارچ کے درمیان 30 ریاستوں کے 31000 سے زیادہ لوگوں کا نمونہ لے کرکیا گیا ہے۔

    فرسٹ پوسٹ ٹرسٹ سروے دو مارچ سے 22 مارچ کے درمیان 30 ریاستوں کے 31000 سے زیادہ لوگوں کا نمونہ لے کرکیا گیا ہے۔

    • Share this:
      اس بارکے لوک سبھا الیکشن میں جہاں ایک طرف سبھی پارٹیاں بی جے پی کو روکنے کے لئے ہرممکن کوشش کررہی ہیں۔ عظیم اتحاد اورکانگریس مل کروزیراعظم مودی کو اس بار ہرانا چاہتی ہیں۔ تاہم ان سب کے درمیان فرسٹ پوسٹ ٹرسٹ سروے میں عوام کا موڈ کچھ اور ہی دکھا رہا ہے۔ فرسٹ پوسٹ ٹرسٹ کے سروے میں 63.4 فیصد لوگ چاہتے ہیں کہ نریندرمودی کو ایک بار پھرسے وزیراعظم بنیں۔

      فرسٹ پوسٹ ٹرسٹ سروے دو مارچ سے 22 مارچ کے درمیان 30 ریاستوں کے 31000 سے زیادہ لوگوں کا نمونہ لےکرکیا گیا ہے۔ وزیراعظم کی دوڑ میں دوسرے نمبرپر راہل گاندھی ہیں، لیکن مقبولیت کی دوڑ میں راہل گاندھی مودی سے بہت دورہیں۔ صرف 16.1 فیصد لوگ راہل گاندھی کو وزیراعظم کے طورپردیکھنا چاہتے ہیں۔

      ممتا بنرجی کو 3.4 فیصد ، مایاوتی کو 2.2 فیصد اورپرینکا گاندھی کو 1.5 فیصد لوگ وزیر اعظم کے طورپردیکھنا چاہتے ہیں۔ اس بارکے لوک سبھا الیکشن میں قومی سیکورٹی کو بڑے مدعے کے طورپر دیکھاجارہا ہے۔ پلوامہ میں سی آرپی ایف کے قافلے میں حملے کے بعد جس طرح سے ہندوستانی فضائیہ نے پاکستان میں گھس کرجیش محمد کے ٹھکانوں پرحملہ بولا ہے، اس سے ملک کے عوام کا فوج پراعتماد بڑھ گیا ہے۔

      فرسٹ پوسٹ ٹرسٹ سروے میں اس بات کا انکشاف ہوتا ہے کہ ملک کےعوام سب سے زیادہ اگرکسی پربھروسہ کرتے ہیں تو وہ ملک کی فوج ہے۔ سروے کے مطابق ملک کے 60.1 فیصد لوگ ہندوستانی فضائیہ پرپورا بھروسہ کرتے ہیں جبکہ 13.1 فیصد لوگوں کو فوج پربھروسہ توہے، لیکن تھوڑا کم ہے۔ اس سروے میں ملک کے وزیراعظم نریندر مودی دوسرے نمبر پرہیں۔

      فرسٹ پوسٹ سروے کے مطابق 51.7 فیصد عوام کوملک کے وزیراعظم پرسب سے زیادہ بھروسہ ہے۔ وہیں 17.1 فیصد لوگوں کو وزیراعظم پرتھوڑا کم بھروسہ ہے۔ ملک کے عوام نے تیسرے نمبرپرملک کی عدالت کو رکھا ہے۔ سروے کے مطابق 48.9 فیصد لوگوں کو عدلیہ پربھروسہ ہے۔ سروے میں بھارتیہ ریزرو بینک، سی بی آئی، الیکشن کمیشن، پارلیمنٹ، پولیس، میڈیا، سیاسی پارٹیاں اورلیڈروں کے بارے میں بھی بات کی گئی ہے۔
      First published: