உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ایوارڈ واپس کرنے والے مصنفین کو کتاب میلے میں مدعو نہیں کیا گیا

    نئی دہلی۔  راجدھانی کے پرگتی میدان میں آج سے شروع ہوئے 24 ویں کتاب میلہ میں عدم رواداری کے معاملوں پر ایوارڈ واپس کرنے والے کسی بھی مصنف کو نیشنل بک ٹرسٹ کے پروگرام میں مدعو نہیں کیا گیا ہے۔

    نئی دہلی۔ راجدھانی کے پرگتی میدان میں آج سے شروع ہوئے 24 ویں کتاب میلہ میں عدم رواداری کے معاملوں پر ایوارڈ واپس کرنے والے کسی بھی مصنف کو نیشنل بک ٹرسٹ کے پروگرام میں مدعو نہیں کیا گیا ہے۔

    نئی دہلی۔ راجدھانی کے پرگتی میدان میں آج سے شروع ہوئے 24 ویں کتاب میلہ میں عدم رواداری کے معاملوں پر ایوارڈ واپس کرنے والے کسی بھی مصنف کو نیشنل بک ٹرسٹ کے پروگرام میں مدعو نہیں کیا گیا ہے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی۔  راجدھانی کے پرگتی میدان میں آج سے شروع ہوئے 24 ویں کتاب میلہ میں عدم رواداری کے معاملوں پر ایوارڈ واپس کرنے والے کسی بھی مصنف کو نیشنل بک ٹرسٹ کے پروگرام میں مدعو نہیں کیا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق ٹرسٹ کی دو رکنی کمیٹی نے میلے کے تمام پروگراموں میں شرکت کرنے والے مصنفین کے سیاسی عزائم کا پتہ لگانے کیلئے دو رکنی ایک کمیٹی تشکیل دی جس میں دہلی یونیورسٹی میں ہندی کے ٹیچر اونیجیش اوستھی اورماکھن لال چترویدی یونیورسٹی کے ارون بھگت شامل تھے۔


      اس کمیٹی نے دو میٹنگیں کرکے پروگرام میں شرکت کرنے والے مصنفین اور موضوعات کا باقاعدہ جائزہ لیا تاکہ میلے کے دوران مصنفین عدم رواداری کا معاملہ نہ اٹھائیں اور نہ کوئی تنازعہ کھڑا کریں۔ میلے میں تقریباً 500 سے زیادہ پروگرام ہو رہے ہیں لیکن کچھ نجی پروگراموں میں اشوک واجپئی جیسے مصنفین کو مدعو کیا گیا ہے۔


      میلے میں ٹرسٹ نے ڈاکٹر نامور سنگھ، کمل کشور گوئنکا، چتر مردل، نریندر کوہلی، چندر کانتا جیسے کئی مصنفین کو مدعو کیا ہے۔

      First published: