Aryan Khan Case: سمیر وانکھیڑے کا دعویٰ، این سی بی کے سینئر افسران نے چھاپے کی تعریف کی

سمیر وانکھیڑے

سمیر وانکھیڑے

سی بی آئی نے نارکوٹکس کنٹرول بیورو کے سابق زونل ڈائریکٹر سمیر وانکھیڑے کو آریان خان منشیات کیس میں طلب کیا ہے۔ اس کے بعد وانکھیڑے نے دہلی ہائی کورٹ میں عرضی داخل کی ہے۔ اس میں انہوں نے دعویٰ کیا کہ انہوں نے اپنے سینئر افسران کو آریان خان کی گرفتاری سے آگاہ کر دیا تھا۔

  • News18 Urdu
  • Last Updated :
  • New Delhi, India
  • Share this:
    نئی دہلی: سی بی آئی نے نارکوٹکس کنٹرول بیورو کے سابق زونل ڈائریکٹر سمیر وانکھیڑے کو آریان خان منشیات کیس میں طلب کیا ہے۔ اس کے بعد وانکھیڑے نے دہلی ہائی کورٹ میں عرضی داخل کی ہے۔ اس میں انہوں نے دعویٰ کیا کہ انہوں نے اپنے سینئر افسران کو آریان خان کی گرفتاری سے آگاہ کر دیا تھا۔ وانکھیڑے کی عرضی CNN-News18 کو موصول ہوئی ہے۔ یہ گزشتہ بدھ کو ہائی کورٹ میں این سی بی کے ایک سینئر افسر کے خلاف کراس ایف آئی آر درج کرنے کے لیے پیش کی گئی تھی۔

    عدالت نے فی الحال وانکھیڑے کو عبوری تحفظ فراہم کیا ہے اور ان سے کہا کہ وہ بامبے ہائی کورٹ سے رجوع کریں، کیونکہ یہ معاملہ ان کے دائرہ اختیار سے متعلق ہے۔ یہ تحفظ 22 مئی تک کارآمد ہے۔ وانکھیڑے نے اپنی عرضی میں سینئر عہدیداروں کے ساتھ واٹس ایپ چیٹس کو بھی منسلک کیا ہے۔ جس میں دکھایا گیا ہے کہ ہر کوئی ان کے کام کو سراہ رہا ہے۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ آریان کی گرفتاری سینئر افسران کے علم میں لاکر کی گئی تھی۔

    بحر ہند میں بے بس ہوا چین، ڈوبے جہاز کو تلاش کرنے کیئے پھر ہندوستان نے بھیجا اپنا طیارہ

    Top Medical College: یوپی کے ٹاپ میڈیکل انسٹی ٹیوٹ، سستے میں ہو جاتا ہے ایم بی بی ایس، جان لیں فیس

    چیٹ سے پتہ چلتا ہے کہ وانکھیڑے کے فوری باس نے اس سے کہا تھا کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ سینئر پبلک پراسیکیوٹر آریان کے ریمانڈ کے لیے دباؤ ڈالیں۔ وانکھیڑے کے مطابق انہیں تحقیقات کے لیے اضافی تعاون بھی ملا تھا۔ انہیں اندور اور احمد آباد سے دو ٹیمیں دی گئیں۔ ذرائع کے مطابق، 'ہم جلد ہی عدالت جائیں گے۔ اس کا عمل جاری ہے۔ آج ایسا ہونے کا امکان نہیں ہے، فی الحال وانکھیڑے عبوری تحفظ کی بنیاد پر سی بی آئی کے سامنے پیش نہیں ہوئے ہیں۔ سی بی آئی کے ایک اعلیٰ ذرائع نے بدھ کو بتایا کہ کیس کی جانچ کرنے والی ٹیم شواہد اکٹھا کرنے کے لیے دہلی سے ممبئی کے لیے روانہ ہو گئی ہے۔



    آریان خان کو ملوث نہ کرنے پر 25 کروڑ کی رشوت
    افسران نے بتایا کہ سمیر وانکھیڑے اور دیگر نے مبینہ طور پر آریان خان کو منشیات کے معاملے میں ملوث نہ کرنے کے لیے 25 کروڑ روپے کی رشوت طلب کی تھی۔ اس کے بعد یہ ڈیل 18 کروڑ روپے میں طے پائی۔ پنچوں نے پھر رشوت کے طور پر 50 لاکھ روپے لیے، لیکن پھر ٹوکن منی کا ایک حصہ واپس کر دیا۔ بتادیں کہ کروز ڈرگز کیس میں نارکوٹکس کنٹرول بیورو نے چھاپہ مار کر آریان خان کو گرفتار کیا تھا۔ انہیں 4 ہفتے جیل میں رہنا پڑا تھا۔

    اس کے بعد، مئی 2022 میں، انسداد منشیات ایجنسی کے ذریعے 'ثبوتوں کی کمی' کی وجہ سے تمام الزامات سے بری کر دیا گیا تھا۔ اس سے پہلے، انسداد منشیات ایجنسی کی طرف سے تشکیل کردہ ایک خصوصی تحقیقاتی ٹیم (ایس آئی ٹی) نے دعوی کیا تھا کہ وانکھیڑے کی قیادت میں تحقیقات میں کوتاہی ہوئی تھی.
    Published by:sibghatullah
    First published: