உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    قومی اردوکونسل کا بڑا قدم، عالمی اردوکانفرنس میں مدعو کئے گئے پاکستانی ادیبوں کی شرکت منسوخ کردی گئی

    قومی اردو کونسل۔

    قومی اردو کونسل۔

    قومی اردو کونسل کے ڈائریکٹر ڈاکٹر شیخ عقیل احمد نےبتایا کہ پلوامہ دہشت گردانہ حملے کے بعد ماحول ناسازگارہونے کے بعد اوروزیراعظم کے فیصلے کے بعد ہم نے یہ فیصلہ کیا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: پاکستان کی دہشت گرد تنظیم جیش محمد کے ذریعہ جموں و کشمیر کے پلوامہ میں ہونے والے دہشت گردانہ ، وحشیانہ اور ظالمانہ حملے کے بعد  قومی اردو کونسل برائے فروغ اردو زبان نے بڑا قدم اٹھاتے ہوئے سخت مذمت کرتے ہوئے کہا کہ پلوامہ دہشت گردانہ حملے کے تناظرمیں قومی اردو کونسل کے ذریعہ پاکستانی ادیبوں کی شرکت منسوخ کردی گئی ہے۔

      قومی اردو کونسل کے ڈائریکٹر ڈاکٹر شیخ عقیل احمد نے نیوز 8 اردو سے فون پربات کرتے ہوئے اس کی تصدیق کی اوربتایا کہ پاکستان کے جن ادیبوں کو دعوت نامہ بھیجا گیا تھا، انہیں بذریعہ ای میل شرکت منسوخ کئے جانے کی اطلاع دے دی گئی ہے۔  انہوں نے کہا کہ موجودہ ناسازگار ماحول  کومد نظررکھتے ہوئے ہندوستان کے لوگوں کے جذبات کی قدر کرتے ہوئے ہماری حکومت اوروزیراعظم نریندر مودی نے جو فیصلہ کیا ہے، قومی اردو کونسل اس کے ساتھ کھڑی ہے، اس لئے ہم نے یہ فیصلہ کیا ہے۔

      ڈاکٹرعقیل احمد نے کہا کہ سازگارماحول میں محبت کی بات ہوتی ہے، جب 40 سے زائد ملک کے نوجوانوں کوشہید کردیا جائے تو ایسی صورت میں محبت کی بات کرنا ممکن نہیں ہے۔ اسی لئے قومی اردو کونسل نے یہ قدم اٹھایا ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ  اس حملے سے پورا ملک صدمے میں ہے اورپاکستان کے خلاف ملک بھر میں غم وغصہ ہے، اس لئے ہم پاکستان کے ذریعہ کی جانے والی حرکت کی مذمت کرتے ہیں۔

      واضح رہے کہ  قومی کونسل برائے فروغ اردو زبان کی جانب سے دہلی میں 18 تا 20 مارچ کوعالمیاردو کانفرنس کا انعقاد کیا جارہا ہے، جس میں پاکستانی ادیبوں کو بھی مدعو کیا گیا تھا، تاہم دہشت گرد تنظیم جیش محمد کے ذریعہ پلوامہ میں دہشت گردانہ حملے کے بعد ہندوستان نے پاکستان سے تمام تعلقات ختم کرنے کا اعلان کردیا ہے۔ ایسے میں قومی اردو کونسل نے بھی حکومت کے شانہ بشانہ کھڑے ہوکرانتہائی اہم قدم اٹھایا ہے۔
      First published: