ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

جے این یو معاملہ پر پارلیمنٹ میں حکومت اور بی جے پی کا سخت موقف اختیار کرنے کا ارادہ

نئی دہلی : جواہر لعل نہرو یونیورسٹی (جے این یو) معاملے پر اپوزیشن جماعتوں کے سخت موقف کے پیش نظر مودی حکومت اور بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے بھی پارلیمنٹ میں اس معاملے پر جارحانہ رویہ اپنانے کا فیصلہ کیا ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Feb 24, 2016 09:25 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
جے این یو معاملہ پر پارلیمنٹ میں حکومت اور بی جے پی کا سخت موقف اختیار کرنے کا ارادہ
نئی دہلی : جواہر لعل نہرو یونیورسٹی (جے این یو) معاملے پر اپوزیشن جماعتوں کے سخت موقف کے پیش نظر مودی حکومت اور بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے بھی پارلیمنٹ میں اس معاملے پر جارحانہ رویہ اپنانے کا فیصلہ کیا ہے۔

نئی دہلی : جواہر لعل نہرو یونیورسٹی (جے این یو) معاملے پر اپوزیشن جماعتوں کے سخت موقف کے پیش نظر مودی حکومت اور بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے بھی پارلیمنٹ میں اس معاملے پر جارحانہ رویہ اپنانے کا فیصلہ کیا ہے۔


جے این یو معاملے پر راجیہ سبھا میں آ ج بحث ہوگی ، جبکہ لوک سبھا میں اس پر 25 فروری کو بحث کرائی جا سکتی ہے۔ بی جے پی پارلیمانی پارٹی کی ایگزیکٹیو اور حکمران قومی جمہوری اتحاد (این ڈی اے) کے اتحادیوں کی گزشتہ روز شام ہوئی مختلف میٹنگوں میں جے این یو معاملے کے تمام پہلوؤں کی اطلاع دی گئی۔ دونوں میٹنگوں میں وزیر اعظم مودی بھی موجود تھے۔


ذرائع کے مطابق بی جے پی صدر امت شاہ، وزیر خزانہ ارون جیٹلی اور پارلیمانی امور کے وزیر ایم وینکیا نائیڈو نے بی جے پی ارکان اور این ڈی اے کے رہنماؤں کو حکومت کی حکمت عملی سے آگاہ کرایا۔


بی جے پی پارلیمنٹ کے اندر اور باہر اس مسئلے کو پرزور طریقے سے اٹھائے گي۔ پارٹی کا کہنا ہے کہ تعلیمی اداروں میں ملک مخالف نعرے برداشت نہیں کئے جا سکتے۔

First published: Feb 24, 2016 09:25 AM IST