உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اولا اور اوبر کے خلاف ہڑتال پر گئے آٹو ڈرائیور ، کیجریوال حکومت کو دی وارننگ

     دہلی میں تقریبا 85 ہزار آٹو رکشہ اور 15 ہزار پیلی کالی ٹیکسیاں ہیں ۔ ایک ساتھ سڑکوں سے اتنی گاڑیوں کے ہٹ جانے سے مسافروں کو پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے

    دہلی میں تقریبا 85 ہزار آٹو رکشہ اور 15 ہزار پیلی کالی ٹیکسیاں ہیں ۔ ایک ساتھ سڑکوں سے اتنی گاڑیوں کے ہٹ جانے سے مسافروں کو پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے

    دہلی میں تقریبا 85 ہزار آٹو رکشہ اور 15 ہزار پیلی کالی ٹیکسیاں ہیں ۔ ایک ساتھ سڑکوں سے اتنی گاڑیوں کے ہٹ جانے سے مسافروں کو پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے

    • IBN7
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی : دہلی  این سی آر میں آج مسافروں کو کافی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ ایپلی کیشن پر مبنی ٹیکسی سروسز کے خلاف آٹو رکشہ اور ٹیکسی یونینوں نے غیر معینہ مدت کی ہڑتال کا اعلان کیا ہے ۔ دہلی میں تقریبا 85 ہزار آٹو رکشہ اور 15 ہزار پیلی کالی ٹیکسیاں ہیں ۔ ایک ساتھ سڑکوں سے اتنی گاڑیوں کے ہٹ جانے سے مسافروں کو پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔

      بیس ٹرانسپورٹ یونینوں کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے مطابق گھریلو اور بین الاقوامی ہوائی اڈوں کی آٹو اور ٹیکسی یونینوں نے بھی ہڑتال کی حمایت کی ہے ۔ ٹیکسی یونین گزشتہ چند ماہ سے مسلسل ایپ پر مبنی اولا اور اوبر جیسی کیب سروسز کو بند کرنے کا مطالبہ کر رہی تھی ۔ آٹو ٹیکسی ڈرائیوروں کے مطابق اولا اور اوبر کی وجہ سے آٹو ٹیکسی ڈرائیوروں کی روزی روٹی متاثر ہو رہی ہے ۔

      لہذا خود ٹیکسی یونین نے ہڑتال کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ یونین کے مطابق حکومت جب تک ان کے مطالبات کو نہیں مان لیتی ، ٹیکسی ڈرائیور اور آٹو رکشہ سڑکوں پر نہیں اتریں گے ۔ ٹیکسی ڈرائیوروں کا دعوی ہے کہ کیجریوال حکومت کو بار بار ایپ پر مبنی کیب سروس کی شکایت کرنے کے باوجود حکومت نے ایسی کمپنیوں پر کوئی کارروائی نہیں کی ۔
      First published: