உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اردوکے فروغ کے ساتھ مسلمانوں کے ہاتھ میں قرآن اورکمپیوٹرکے خواب کو شرمندہ تعبیرکریں گے: ڈاکٹرعقیل احمد

    ڈاکٹرشیخ عقیل احمد نے قومی کونسل برائے فروغ اردو زان کے نئے ڈائریکٹر کا چارج سنبھالنے کے بعد نیوز 18 اردو سے خصوصی بات چیت میں اردو کے فروغ کا عزم کیا۔

    ڈاکٹرشیخ عقیل احمد نے قومی کونسل برائے فروغ اردو زان کے نئے ڈائریکٹر کا چارج سنبھالنے کے بعد نیوز 18 اردو سے خصوصی بات چیت میں اردو کے فروغ کا عزم کیا۔

    قومی اردو کونسل کے ڈائریکٹرعہدے کا چارج سنبھالنے کے بعد عقیل احمد نے کہا کہ این سی آرٹی کے ساتھ بھی تال میل بٹھائیں گے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      قومی اردوکونسل کے نئے ڈائریکٹرڈاکٹرشیخ عقیل احمد نے اردو تعلیم اوربچوں کو اردو پڑھانا اولین ترجیح بتایا ہے۔ نیوز 18 سے خصوصی بات چیت کرتے ہوئے ڈاکٹرشیخ عقیل احمد نے کہا کہ ان کی ترجیحات اسکولوں میں اردو کولے کرکام کرنا ہوگا اورساتھ ہی ساتھ اردو کی سرگرمیاں مشاعرے، سیمیناراورورکشاپ سمیت تمام پروگرام بھی جاری رکھیں گے۔

      انہوں نے کہا کہ نئی ٹکنالوجی سے جوڑنا بھی ان کی اولین ترجیح ہوگی اوروہ اس کے لئے سافٹ ویئربنانے اورای لائبریری جیسے پروجیکٹ پرکام کریں گے۔ وزیراعظم نریندرمودی کے ذریعہ دکھائے گئے خواب کو شرمندہ تعبیرکریں گے کہ مسلمانوں کے ایک ہاتھ میں قرآن اوردوسرے ہاتھ میں کمپیوٹرہو۔

      شیخ عقیل احمد نے کہا کہ اب تک قومی اردو کونسل میں اردو کی نہیں پروفیسروں کی خدمت ہورہی تھی، وہ اس سلسلے کوتوڑدیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اسکولوں میں بچوں تک کتابیں پہنچانے کے لئے وہ این سی آرٹی کے ساتھ تال میل بٹھانے کی کوشش کریں گے۔  انہوں نے یہ بھی کہا کہ ان کی نہ توکسی کے ساتھ دوستی ہے اورنہ ہی دشمنی۔ اردو کو بڑھانے کے لئے سب مل کر کام کریں گے۔ کسی کے ساتھ ناانصافی نہیں ہوگی۔

      اس سے قبل ڈاکٹرشیخ عقیل احمد نے پروفیسرارتضیٰ کریم کی جگہ پرچارج سنبھالا۔ اس موقع پرکئی محبان اردو بھی موجود رہے۔ خصوصی طورپردہلی یونیورسٹی کے صدرشعبہ اردو پروفیسرابن کنول، ڈاکٹرماجد احمد تالی کوٹی، ڈاکٹرترون اورڈاکٹرایم رحمت اللہ وغیرہ نے ڈاکٹرعقیل احمد کو مبارکباد پیش کی۔

      پروفیسرابن کنول نے کہا کہ ڈاکٹرعقیل احمد نوجوان ہیں، وہ دہلی یونیورسٹی کے ذہین اورمحنتی طالب علم رہے ہیں، اس کے بعد انہوں نے تصنیف وتالیف کے فروغ کے لئے کام کیا ہے۔ ہمیں امید ہے کہ وہ اردو کے سب سے اعلیٰ اور نمایاں ادارے کی ذمہ داری سنبھالنے کے بعد اردو کی بہترخدمت کریں گے اوردہلی یونیورسٹی کے شعبہ اردو کانام روشن کریں گے۔

      یہ بھی پڑھیں:   کوئی اور نہیں ہم خود اردو کے دشمن ہیں: پروفیسر ارتضی کریم

      یہ بھی پڑھیں:   ڈاکٹر خواجہ اکرام نے کی این سی پی یو ایل کے انضمام کی مخالفت، کہا، اردو کی تباہی کے ذمہ دار لوگوں کا بھی مواخذہ کیا جانا چاہئے

       

      یہ بھی پڑھیں:  قومی کونسل برائے فروغ اردو زبان کا مختلف یونیورسٹیوں کی کتابوں کو آن لائن کرنے کا فیصلہ

       

       
      First published: