உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہندوستان کے خلاف سازش رچ رہا ہے جیش، قندھار میں کی طالبان لیڈرشپ سے ملاقات : خفیہ ایجنسی

    ہندوستان کے خلاف سازش رچ رہا ہے جیش، قندھار میں کی طالبان لیڈرشپ سے ملاقات : خفیہ ایجنسی

    ہندوستان کے خلاف سازش رچ رہا ہے جیش، قندھار میں کی طالبان لیڈرشپ سے ملاقات : خفیہ ایجنسی

    خفیہ ایجنسیوں نے پہلے سے ہی اس بات کا اندیشہ ظاہر کیا تھا کہ افغانستان میں طالبان کے اقتدار پر قابض ہونے کے بعد طالبان کیلئے افغانستان میں لڑ رہے جیش اور لشکر کے دہشت گرد کشمیر کا رخ کرسکتے ہیں ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : افغانستان پر طالبان کے جنجگووں کے قبضہ کے بعد ہندوستان کی مشکلات بڑھنے کا اندیشہ ظاہر کیا جارہا ہے ۔ اسی درمیان ہندوستانی خفیہ ایجنسیوں کو خبر ملی ہے کہ قندھار میں دہشت گرد تنظیم جیش نے طالبان کی لیڈر شپ سے میٹنگ کرکے انڈیا سینٹرک آپریشنز کیلئے مدد مانگی ہے ۔

      خفیہ ایجنسیوں کے اسسٹمنٹ کے مطابق یہ جیش اور طالبان میٹنگ کا اثر ہے کہ 23 اگست کو افغانستان ، پاکستان نزاد کے 40 ۔ 50 ہتھیاروں سے لیس دہشت گردوں کو سویلین وہیکل میں پاک مقبوضہ کشمیر کے راول کوٹ علاقہ سے ہللان شمالی لانچ پیڈ لایا گیا ہے ۔ آئی ایس آئی کی جانب سے ان دہشت گردوں کو جموں و کشمیر میں دراندازی کرانے کی پرزور کوشش کی جارہی ہے ۔ یہ لوگ روزانہ ریکی کیلئے میرپور ضلع کے کچاربن علاقہ میں کوپرا کے جنگلوں میں آرہے ہیں ۔ ایجنسی کا اسسمنٹ ہے کہ یہ لوگ بی اے ٹی ایکشن کے بعد ہندوستانی سرحد میں داخل ہونے کی کوشش کریں گے ۔

      اس کو لے کر سیکورٹی ایجنسیاں پوری طرح سے الرٹ ہیں ۔ اس کے علاوہ خفیہ ایجنسیوں کو یہ بھی جانکاری ملی ہے کہ پاک مقبوضہ کشمیر کے فارورڈ کہوٹا دہشت گرد لانچ پیڈ سے ہتھیاروں اور ڈرگس کا جو ذخیرہ ( جس میں چینی پستول ، اے کے 47 اور ڈرگس کے 500 گرام کے چار پیکٹ شامل ہیں ) ڈسپیچ کیا گیا تھا وہ ایل او سی کے پاس کے پاکستانی علاقہ میں شیخ نالا ، ہتھ لانگ پہنچ چکا ہے ۔ اس کو بارہمولہ بھیجنے کی کوشش کی جارہی ہے ۔

      خفیہ ایجنسیوں کو اس بات کا بھی پتہ چلا ہے کہ 16 ۔ 17 اگست کی شب میں ہندوستانی سرحد میں داخل ہوا لشکر کے چار دہشت گردوں کا ایک گروپ پونچھ کے انگن پتھری کی بجائے راستہ بدلتے ہوئے براری پہنچا ۔ وہاں دہشت گردوں کے مددگار کے یہاں دن گزارنے کے بعد یہ دہشت گرد ، دہشت گرانہ حملے کو انجام دینے کے مقصد سے کشمیر وادی کی جانب روانہ ہوگئے ۔ سیکورٹی فورسیز ان کی تلاش کیلئے جگہ جگہ سرچ آپریشن چلا رہی ہے ۔

      خفیہ ایجنسیوں نے پہلے سے ہی اس بات کا اندیشہ ظاہر کیا تھا کہ افغانستان میں طالبان کے اقتدار پر قابض ہونے کے بعد طالبان کیلئے افغانستان میں لڑ رہے جیش اور لشکر کے دہشت گرد کشمیر کا رخ کرسکتے ہیں ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: