உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    نیوز 18 رائزنگ انڈیا سمٹ : دیگر ممالک کے مقابلہ میں تیزی سے آگے بڑھا ہے ہندوستان : چیمبرس

    ملک کا سب سے بڑا میڈیا گروپ نیٹ ورک 18 رائزنگ انڈیا سمٹ کا انعقاد کرنے جارہا ہے ۔ اس سمٹ کا انعقاد 16 اور 17 مارچ کو دہلی کے ہوٹل تاج میں ہوگا ۔

    ملک کا سب سے بڑا میڈیا گروپ نیٹ ورک 18 رائزنگ انڈیا سمٹ کا انعقاد کرنے جارہا ہے ۔ اس سمٹ کا انعقاد 16 اور 17 مارچ کو دہلی کے ہوٹل تاج میں ہوگا ۔

    ملک کا سب سے بڑا میڈیا گروپ نیٹ ورک 18 رائزنگ انڈیا سمٹ کا انعقاد کرنے جارہا ہے ۔ اس سمٹ کا انعقاد 16 اور 17 مارچ کو دہلی کے ہوٹل تاج میں ہوگا ۔

    • Share this:

      ملک کا سب سے بڑا میڈیا گروپ نیٹ ورک 18 رائزنگ انڈیا سمٹ کا انعقاد کرنے جارہا ہے ۔ اس سمٹ کا انعقاد 16 اور 17 مارچ کو دہلی کے ہوٹل تاج میں ہوگا ۔ اس پروگرام میں ملک کی سرکردہ شخصیات کے ساتھ ساتھ دنیا کی کئی مشہور ہستیاں بھی شرکت کریں گی ۔ پہلے دن وزیر اعظم مودی اہم مقرر ہوں گے۔ سمٹ کے توسط سے سیاست ، تجارت ، انتظامیہ ، آرٹس اور تعلیم کے شعبہ کی قومی و بین الاقوامی شخصیات کو ایک چھت کے نیچے جمع کیا جائے گا۔
      نیوز 18 کے رائزنگ انڈیا سمٹ شروع ہونے سے کچھ گھنٹوں پہلے جے سی ٹو وینچرس کے بانی اور سی ای او جان چیمبرس نے کہا ہے کہ ہندوستان کی ترقی کی کہانی دنیا کے دیگر ممالک کیلئے ایک مثال ہے ۔ ان کا کہنا ہے کہ ہندوستان تیز رفتاری کے ساتھ ترقی کی راہ پر گامزن ہے ۔ سسکو کے سابق سی ای او چیمبر نے کہا کہ ہندوستان کے بارے میں ہز چیز انہیں محظوظ کرتی ہے۔
      نئی دہلی میں 16 اور 17 مارچ کو ہونے والی رائزنگ انڈیا سمٹ کو لے کر چیمبرس نے نیوز 18 سے بات چیت کی ۔ پڑھیں ان سے ہوئی بات چیت کی کچھ خاص باتیں :۔
      رائزنگ انڈیا کو لے کر آپ کی کیا رائے ہے ؟
      پندرہ سالوں تک ہندوستان میں سسکو کے ورلڈ ہیڈ کوارٹر کی میں نے قیادت کی ، تین سال پہلے میں وزیر اعظم مودی سے بھی ملا تھا ، میں نے محسوس کیا کہ مودی دنیا کے عظیم لیڈروں میں شمار ہوسکتے ہیں ۔ مودی اس جانب لگاتار آگے بڑھ رہے ہیں۔
      جب آپ کل کے ہندوستان کی طرف دیکھتے ہیں تو آپ پائیں گے کہ 1.3 ملین لوگ ایسے ہیں ، جن کی اوسط عمر 26 سال ہے ۔ یہ نوجوان طاقت سب سے زیادہ محنت کرنے والی اور خالق ذہنیت کی مالک ہے ۔ آپ کی حکومت ایسے سمت میں کام کررہی ہے کہ نوکریوں کے مواقع پیدا ہوسکیں ، لوگوں کی زندگی کی سطح میں سدھار ہوسکے اور ہندوستان عالمی طاقت بن سکے۔
      میرا ماننا ہے کہ اگر آپ 10 سال بعد کے ہندوستان کے بارے میں سوچیں گے ، تب جی ڈی پی کی شرح مزید سدھرے گی ۔ شاید ایک دہائی میں جی ڈی پی میں 10 فیصدی کا اضافہ ہو جائے ۔ میں جانتا ہوں کہ تین سال پہلے ملک کے سامنے کئی چیلنجز تھے ، لیکن اب ملک کے لوگ زیادہ پرامید ہوگئے ہیں۔
      ہندوستان کی ترقی میں کون کون سی رکاوٹیں ہیں ؟
      راستے میں رکاوٹیں تو ہوں گی ہی ، ایسا ہوتا آیا ہے اور آگے بھی ہوتا رہے گا ، لیکن اگر آپ ہندوستان کے بارے میں دیکھیں تو سبھی 29 ریاستوں کے وزرائے اعلی اور ملک کے وزیر اعظم کے نظریے کو ایک کرکے دیکھیں ، ایسا کرنے سے پریشانیاں مشکل نہیں لگیں گی ۔ وزیر اعظم مودی دنیا میں سب سے بہترین اور زبردست دور اندیشی کی صلاحیت کے مالک ہیں ، وہ ہر روز یہ سوچتے ہوئے اپنے دن کی شروعات کرتے ہیں کہ آج ملک کی بھلائی کیلئے کیا کیا جاسکتا ہے۔
      مودی دنیا کے ان لیڈروں میں سے ہیں ، جو ٹیکنالوجی اور ڈیجیٹلائزیشن کو اچھی طرح سے سمجھتے ہیں ۔ اسی کے تحت مودی ملک میں ڈیجیٹل انڈیا کو لے کر کام کررہے ہیں ۔ مجھے لگتا ہے کہ ہندوستان کو وقت کے ساتھ ساتھ آگے بڑھنے اور بدلنے کی ضرورت ہے ۔ وزیر اعظم مودی بھی وہی کررہے ہیں ۔ ممکنہ طور پر لوگ پہلے ہر تبدیلی کی مخالفت کرتے ہی ہیں ، لیکن آگے بڑھتے رہنے کیلئے اپنے قدم کو روکنا نہیں چاہئے۔
      مودی کی پالیسیوں میں ڈیجیٹل انڈیا بھی شامل ہے ۔ اس سے ہندوستان کی ترقی کو فروغ ملے گا ۔ ہندوستان کی آبادی کا ایک بڑا حصہ نوجوانوں کا ہے ، ان کے مستقبل کیلئے ہمیں ڈیجیٹل انڈیا کے خواب کو شرمندہ تعبیر کرنا ہی ہوگا۔
      ہم شہری اور دیہی ترقی کے درمیان خلیج کو کیسےپاٹ سکتےہیں ؟ 
      انکلوسیو گروتھ کسی بھی ملک کی ترقی میں اہم رول ادا کرتا ہے ۔ میں آپ کے ساتھ وہی چیزیں شیئر کررہا ہوں ،جن سے فرانس گزر رہا ہے ۔ وہاں کی حکومت سبھی لوگوں کیلئے ہمہ گیر ترقی کی سمت میں کام کررہی ہے ۔ ہندوستان کو بھی اپنی 29 ریاستوں میں ایسی چیزوں پر کام کرنے کی ضرورت ہے۔
      عالمی تجارت کے شعبہ میں ہندوستان نے اہم قدم بڑھائے ہیں ۔ ایسے میں ریاستوں کے وزرائے اعلی کو اپنی اپنی ریاست میں ترقی کے کام ہورہے ہیں یا نہیں ، یہ یقینی بنانے کی ذمہ داری لینی ہوگی ۔ ترقی کو ہمہ گیر ترقی میں بدلنے کی ضرورت ہے ۔ ساتھ ہی ساتھ مثبت طریقہ سے مقابلہ آرائی کو بھی بڑھانا ہوگا ۔
      ہندوستان میں غیر ملکی سرمایہ کاروں کیلئے مثبت اور منفی چیزیں کیا ہیں ؟
      ایک تجارتی سرمایہ کار ی کے طور پر اسٹارٹ اپ ان دنوں تیزی سے مقبول ہورہا ہے۔ اسٹارٹ اپ انڈیا ، میک ان انڈیا اور ڈیجیٹل انڈیا جیسی پالیسیوں میں میرا بھی پیسہ لگا ہے ، ایسی پالیسیوں کو لے کر ملک میں ترقی کے بہتر امکانات ہیں۔
      ہندوستان دنیا کے سامنے ترقی کا ایک ماڈل بننے والا ہے ۔ گزشتہ 10 سالوں میں ہندوستان ایک ایسے ملک کے طور پر ابھرا ہے ، جو کئی چیلنجز کا سامنا کرتے ہوئے تیزی سے ترقی کی جانب بڑھا رہا ہے ۔
      حالانکہ کے ایک سرمایہ کار کے طور پر مجھے جو پریشان کرتا ہے وہ تبدیلی کی سست رفتاری ہے ۔ وزیر اعظم مودی کی قیادت میں ہندوستان آگے تو بڑھ رہا ہے ، لیکن تیزی سے آگے اسی وقت بڑھے گا جب تبدیلی کی رفتار میں تیزی آئے گی۔
      رونق کمار گنجن

      First published: