உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہلی وقف بورڈ کے چیئرمینAmanatullah Khan کے خلاف تحریک عدم اعتماد ختم

    انہوں نے چیئرمین امانت اللہ خان سے ملاقات کے دوران کہا کہ میں نے چودھری شریف کے بہکاوے میں آکر اور کچھ دیگر غلط فہمیوں کی بنا پر آپ کی چیرمین شپ کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک میں ان کا ساتھ دیاجس سے میں اپنی حمایت واپس لیتی ہوں ۔ انہوں نے آگے کہا کیا آپ میرے بڑے بھائی ہیں اور آپ پر مجھے پورا اعتماد ہے۔

    انہوں نے چیئرمین امانت اللہ خان سے ملاقات کے دوران کہا کہ میں نے چودھری شریف کے بہکاوے میں آکر اور کچھ دیگر غلط فہمیوں کی بنا پر آپ کی چیرمین شپ کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک میں ان کا ساتھ دیاجس سے میں اپنی حمایت واپس لیتی ہوں ۔ انہوں نے آگے کہا کیا آپ میرے بڑے بھائی ہیں اور آپ پر مجھے پورا اعتماد ہے۔

    انہوں نے چیئرمین امانت اللہ خان سے ملاقات کے دوران کہا کہ میں نے چودھری شریف کے بہکاوے میں آکر اور کچھ دیگر غلط فہمیوں کی بنا پر آپ کی چیرمین شپ کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک میں ان کا ساتھ دیاجس سے میں اپنی حمایت واپس لیتی ہوں ۔ انہوں نے آگے کہا کیا آپ میرے بڑے بھائی ہیں اور آپ پر مجھے پورا اعتماد ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
    دہلی وقف بورڈ کی ممبر رضیہ سلطانہ آج دہلی وقف بورڈ کے آفس دریا گنج پہنچیں اور تحریک عدم اعتماد واپس لینے کا اعلان کیا اور چیئرمین امانت اللہ خان سے ملاقات کی۔رضیہ سلطانہ کا بورڈ آفس میں گلدستے کے ساتھ استقبال کیا گیاسیکشن افسر حافظ محفوظ محمد اور دیگر اسٹاف اراکین نےرضیہ سلطانہ کا گلدستہ کے ساتھ استقبال کیااس دوران بورڈ ممبر حمال اختر صاحب چیف لیگل آفیسر جناب قسیم صاحب بھی موجود رہے۔ چیئرمین امانت اللہ خان نے اس موقع پر بورڈ ممبر رضیہ سلطانہ کا استقبال کیا اور انہیں خوش آمدید کہا۔ تفصیل کے مطابق بورڈ ممبر رضیہ سلطانہ آج دریا گنج واقع وقف بورڈ کے دفتر تشریف لائیں اور انہوں نے چیئرمین امانت اللہ خان سے ملاقات کے دوران کہا کہ میں نے چودھری شریف کے بہکاوے میں آکر اور کچھ دیگر غلط فہمیوں کی بنا پر آپ کی چیرمینی کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک میں ان کا ساتھ دیاجس سے میں اپنی حمایت واپس لیتی ہوں۔

    انہوں نے آگے کہا کیا آپ میرے بڑے بھائی ہیں اور آپ پر مجھے پورا اعتماد ہے، آپ کے ذریعے وقف بورڈ میں کرائے گئے ترقیاتی کاموں سے بھی مجھے واقفیت ہے اور ان کا اعتراف بھی ہے لیکن کچھ دنوں قبل جب آئمہ حضرات کا وظیفہ رک گیا تھا تو مجھے یہ بتایا گیا کہ یہ وظیفہ آپ کی وجہ سے رکا ہے جبکہ حقیقت اس کے برعکس تھی،اس کے علاوہ چوہدری شریف اور دیگرحضرات نے مجھے آپ کے خلاف بھڑکایا اور بد گمانیاں اور غلط فہمیاں پیدا کیں جس کی بنا پرمیں نے عدم اعتماد کی تحریک میں ان کی حمایت کی لیکن اب جبکہ حقیقت واضح ہوگئی ہے اور یہ معلوم ہو گیا ہے کہ ائمہ حضرات کا وظیفہ رکنے میں اور تاخیر ہونے میں سرکاری افسران کی رکاوٹوں کا دخل تھا تو میں نے عدم اعتماد کی تحریک میں اپنے قدم پیچھے ہٹا لیے ہیں اور ایل جی صاحب کو بھی تحریری طور پر اپنی منشا سے آگاہ کردیا ہے اور اب میں ہر طرح سے سے آپ کے ساتھ کھڑی ہوں۔

    جمعیت علماء ہند کی جانب سے BJP MLA T Raja Singh کے خلاف کرائی گئیں 8 ایف آئی آر درج

    گھر میں شادی کی تھی تیاری، اچانک لگی بھیانک آگ سے کنبے کے 5لوگوں کی موت، چھا گیا ماتم

    اس دوران امانت اللہ خان صاحب نے بھی کہا کہ ماضی میں جو کچھ ہوا اسے چھوڑ کر کر ہم سب کو وقف بورڈ کی ترقی میں ساتھ مل کر کام کرنا چاہیے اور آپ میری بڑی بہن ہیں آپ کا وقف بورڈ میں استقبال ہے۔غور طلب ہے ہے کہ بورڈ ممبر رضیہ سلطانہ کے اس قدم سے سے تکنیکی بنیاد پر چیئرمین امانت اللہ خان کے خلاف لائی گئی عدم اعتماد کی تحریک ختم ہو جائے گی اور اب جلد ہی وقف بورڈ کی میٹنگ ہوگی جس میں یہ تمام فیصلے ہوں گے اور میٹنگ نہ ہونے کی وجہ سے بورڈ کے جو کام رکے ہوئے ہیں ان میں بھی تیزی آئے گی۔

    اس بات کے بھی امکانات ہیں ہیں اس بات کے بھی امکانات ہیں کہ ایل جی بورڈ ممبر چوہدری شریف کے خلاف بھی جلد سے جلد کوئی فیصلہ لے لیں کیونکہ ذرائع کے مطابق ق ایسی اطلاعات ہیں ہیں کہ حکومت کی طرف سے چوہدری شریف کے خلاف ایل جی کو فائل بھیج دی گئی ہے جس پر ایل جی جلد فیصلہ لے سکتے ہیںتفصیل کے مطابقتین ممبران میں سے ایک ممبر رضیہ سلطانہ نے رجوع کرلیا ہے اور وہ امانت اللہ خان صاحب کے چیئرمین بنے رہنے کی حمایت میں آگئی ہیں آخر جیت حق ہی کی ہوتی ہے چاہے اسمیں تھوڑا وقت لگ جائےچودھری شریف کے بہکاوے میں دو ممبر آگئے تھے جنہوں نے ایل جی صاحب کو عدم تحریک کی ایک تحریر دی تھی جسمیں درخواست کی گئی تھی کہ امانت اللہ خان صاحب کو چیئرمین کی کرسی سے ہٹادیا جائے۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: