உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ’کون کیاکھائےاورکون کیانہ کھائےاس پرکوئی پابندی نہیں لگاسکتا‘ آر ایس ایس لیڈر

    انہوں نے مزید کہا کہ یہ ان کی ذاتی رائے ہے۔

    انہوں نے مزید کہا کہ یہ ان کی ذاتی رائے ہے۔

    Food choices: سنگھ کے تھنک ٹینک پرجنا پرواہا (Prajna Pravaha) کے سربراہ جے نندا کمار نے کہا کہ سنگھ گوشت کی کھپت کو حد سے باہر نہیں سمجھتا کیونکہ کھانے کا انتخاب دیگر وجوہات کے علاوہ جغرافیائی اور موسمی حالات پر مبنی ہوتا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | Mumbai | Karnataka | Jammu | Hyderabad
    • Share this:
      آر ایس ایس (RSS) کے سینئر کارکن جے نندا کمار (J Nandakumar) نے بدھ کے روز کہا کہ ہندوستان میں پائے جانے والے تنوع پر تبادلہ خیال کرنے اور جشن منانے کی ضرورت ہے۔ کوئی بھی حکومت خوراک کے انتخاب پر پابندیاں نہیں لگا سکتا۔ یعنی کون کیا کھائے اور کون کیا نہ کھائے اس پر کوئی بھی پابندی نہیں لگا سکتا۔ سنگھ کے تھنک ٹینک پرجنا پرواہا (Prajna Pravaha) کے سربراہ جے نندا کمار نے کہا کہ سنگھ گوشت کی کھپت کو حد سے باہر نہیں سمجھتا کیونکہ کھانے کا انتخاب دیگر وجوہات کے علاوہ جغرافیائی اور موسمی حالات پر مبنی ہوتا ہے۔

      سیاسی تجزیہ نگاروں کے مطابق نند کمار کے تبصرے اہمیت کے حامل ہیں، خاص طور پر چونکہ بی جے پی کی حکومت والی کئی ریاستوں میں سال کے مخصوص اوقات میں گوشت کی فروخت پر پابندی عائد کی جاتی ہے اور بعض علاقوں میں اس کا رواج بھی ہے۔ آر ایس ایس لیڈر نے آگے کہا کہ بیف کھانے کے خلاف خدشات سائنس سمیت کئی وجوہات سے پیدا ہوتے ہیں۔

      سنگھ کے مخالفین اس تنظیم پر سبزی خوروں کو فروغ دینے اور گائے کے تحفظ کی آڑ میں چوکسی کی حوصلہ افزائی کا الزام لگاتے ہیں۔ گوشت خاص طور پر گائے کے گوشت کے استعمال پر سنگھ کے نظریہ پر سوال کا جواب دیتے ہوئے کمار نے کہا کہ نان ویجیٹیرین کھانا ممنوع نہیں ہے اور اس پر پابندی نہیں لگائی جا سکتی ہے۔ کچھ عام لوگ نان ویجیٹیرین کھاتے ہیں۔ آپ یہ نہیں کہہ سکتے کہ ہندوستان میں اس پر پابندی ہے۔ آب و ہوا، حالات اور جغرافیائی وجوہات کے مطابق لوگ اس طرح کا کھانا کھاتے ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں: 

      پاکستان کا وہ کرکٹر جس کے کھیلنے پر پی سی بی نے لگادی پابندی، کیوں کرنا پڑا اتنا سخت فیصلہ؟

      انہوں نے پراجنا پرواہا کے زیر اہتمام تین روزہ کنکلیو ’لوک منتھن‘ کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ ہم یہ نہیں کہہ رہے ہیں کہ سبزی خور غیر قانونی ہے۔ ہم یہاں یہ کہنے کے لیے نہیں آئیں ہیں کہ کیا غلط ہے یا نہیں؟ ہم نے ماہرین کو بات چیت کرنے اور اس نتیجے پر پہنچنے کے لیے بلایا ہے جو سب کے لیے پابند بھی نہیں ہوگا۔ 20 ستمبر سے شروع ہونے والا یہ کنکلیو گوہاٹی میں منعقد ہوگا اور اس کا افتتاح نائب صدر جگدیپ دھنکھر کریں گے۔ اختتامی اجلاس سے کیرالہ کے گورنر عارف محمد خان اور آر ایس ایس کے جنرل سکریٹری دتاتریہ ہوسابلے خطاب کریں گے۔

      یہ بھی پڑھیں: 

      شاہین باغ بلڈوزر معاملے میں عارفہ خانم ایڈوکیٹ اور امانت اللہ خان کو دہلی ہائی کورٹ سے راحت



      کمار نے کہا کہ کنکلیو میں شرکاء کئی موضوعات پر کھول کر اظہار خیال کریں گے اور اس پر صحت مند انداز میں مباحثے ہوں گے۔ کچھ دشمن قوتیں ملک کے اتحاد کے خلاف مذموم مہم چلا رہی ہیں۔ کنکلیو کے ساتھ ہم اپنے اتحاد کو مضبوط کرنے کے لیے ملک کے تنوع کا جشن منانا چاہتے ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: