اپنا ضلع منتخب کریں۔

    ایس ایس سی امتحانات صرف ہندی میں کرانے کا کوئی منصوبہ نہیں، حکومت نے راجیہ سبھا میں کیا واضح

    اس کا ذکر قومی تعلیمی پالیسی (2020) میں کیا گیا ہے۔

    اس کا ذکر قومی تعلیمی پالیسی (2020) میں کیا گیا ہے۔

    سرکاری زبانوں پر پارلیمانی کمیٹی کی رپورٹ نے اکتوبر میں ایک سیاسی تنازعہ کھڑا کر دیا تھا جس میں اپوزیشن نے بی جے پی کی قیادت والی حکومت پر ہندی نافذ کرنے کا الزام لگایا تھا۔ تاہم حکام نے میڈیا کو بتایا تھا کہ یہ غیر ہندی بولنے والے خطوں پر زبان کو مسلط نہیں کرتا ہے اور یہ این ای پی 2020 کے طے کردہ اصولوں کے مطابق ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Mumbai | Jammu | Lucknow | Himachal Pradesh | Gujarat
    • Share this:
      مرکزی وزارت داخلہ نے بدھ کو راجیہ سبھا میں بتایا کہ حکومت کے پاس اسٹاف سلیکشن کمیشن (SSC) کے امتحانات صرف ہندی زبان میں منعقد کرنے کی کوئی تجویز نہیں ہے۔ کیرالہ سے ایوان بالا میں سی پی آئی (ایم) کے رکن اے اے رحیم کے ایک تحریری سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیر مملکت برائے داخلہ اجے کمار مشرا نے تمام مرکزی حکومت کے دفاتر اور اداروں میں ہندی کو لازمی قرار دینے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔

      وزیر نے ایک تحریری جواب میں کہا کہ ایس ایس سی کے امتحانات صرف ہندی میں منعقد کرنے کی کوئی تجویز نہیں ہے۔ مشرا نے کہا کہ یونین پبلک سروس کمیشن (UPSC) اور ایس ایس سی مرکزی حکومت میں بھرتی کرنے والی بڑی ایجنسیاں ہیں اور ان دونوں کمیشنوں کے ذریعہ کئے جانے والے ابتدائی امتحانات ہندی اور انگریزی میں متعدد انتخابی معروضی قسم (آبجیکٹیو ٹائپ) کے سوالات پر مشتمل ہوتے ہیں، جس میں امیدوار کو مناسب نشان پر نشان لگانا ہوتا ہے۔

      انہوں نے کہا کہ اسٹاف سلیکشن کمیشن (SSC) کے ذریعہ منعقد ہونے والے امتحانات کا ذریعہ عام طور پر ہندی اور انگریزی ہوتا ہے۔ تاہم ملٹی ٹاسکنگ (نان ٹیکنیکل) اسٹاف امتحان کا پیپر-II ان تمام زبانوں میں منعقد کیا جاتا ہے، جو آئین کے آٹھویں شیڈول میں شامل ہیں۔ سرکاری زبانوں کے حوالے سے ایک اور سوال کا جواب دیتے ہوئے مشرا نے پارلیمنٹ میں بتایا کہ تعلیمی اداروں میں ذریعہ تعلیم کے حوالے سے کئی باتیں قومی تعلیمی پالیسی (2020) میں کہی گئی ہے جس میں اعلیٰ تعلیم میں مزید پروگراموں کی فراہمی، مادری زبان/مقامی زبان کو ذریعہ کے طور پر استعمال کرنے کا تصور کیا گیا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں: 

      سرکاری زبانوں پر پارلیمانی کمیٹی کی رپورٹ نے اکتوبر میں ایک سیاسی تنازعہ کھڑا کر دیا تھا جس میں اپوزیشن نے بی جے پی کی قیادت والی حکومت پر ہندی نافذ کرنے کا الزام لگایا تھا۔

      تاہم حکام نے میڈیا کو بتایا تھا کہ یہ غیر ہندی بولنے والے خطوں پر زبان کو مسلط نہیں کرتا ہے اور یہ این ای پی 2020 کے طے کردہ اصولوں کے مطابق ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: