اپنا ضلع منتخب کریں۔

    سونیا کانگریس صدر کے طور پر رہیں گی برقرار، استعفی کا سوال ہی نہیں، CWC کی 4 گھنٹے میٹنگ کے بعد فیصلہ

    Youtube Video

    کانگریس کو پنجاب میں شکست کا سامنا کرنا پڑا جب AAP نے 117 میں سے 92 اسمبلی سیٹیں جیت کر اقتدار حاصل کیا، جب کہ اتر پردیش، گوا، اتراکھنڈ اور منی پور میں بی جے پی نے اپنی موجودگی درج کرائی۔

    • Share this:
      تقریباً 5 گھنٹے کی اہم میٹنگ(CWC Meeting) کے بعد کانگریس ورکنگ کمیٹی( Congress Working Committee)نے فیصلہ کیا کہ کوئی استعفیٰ نہیں دیا جائے گا اور سونیا گاندھی  (Sonia Gandhi)پارٹی کی صدر(Party President) کے طور پر برقرار رہیں گی۔ میٹنگ کے ایجنڈے میں پانچ ریاستوں اتر پردیش، پنجاب، گوا، اتراکھنڈ اور منی پور میں پارٹی کی انتخابی شکست پر تبادلہ خیال کرنا تھا۔

      اجلاس کے بعد پارٹی نے میڈیا بریفنگ دی۔ قومی ترجمان رندیپ سنگھ سرجے والا اور راجیہ سبھا ایم پی کے سی وینوگوپال نے بریفنگ سے خطاب کیا۔ سرجے والا نے کہا کہ کانگریس پانچ انتخابات والی ریاستوں میں اپنی شکست پر "سخت فکر مند" ہے، اور یہ کہ محدود وقت کی وجہ سے وہ پنجاب میں حکومت مخالف عنصر کو کنٹرول نہیں کر سکی۔

      کانگریس کو پنجاب میں شکست کا سامنا کرنا پڑا جب AAP نے 117 میں سے 92 اسمبلی سیٹیں جیت کر اقتدار حاصل کیا، جب کہ اتر پردیش، گوا، اتراکھنڈ اور منی پور میں بی جے پی نے اپنی موجودگی درج کرائی۔

      مزید پڑھیں: New UP Cabinet: دلت نائب وزیراعلیٰ، کابینہ میں نئے چہرے، یوپی میں بی جے پی کی نئی حکومت کیسی ہو سکتی ہے؟


      وینوگوپال نے کہا کہ سی ڈبلیو سی نے انتخابی نتائج پر تبادلہ خیال کے لیے پانچ گھنٹے کی میٹنگ کی۔ جنرل سکریٹری اور انتخابات کے انچارج نے دیگر مسائل کے ساتھ نتائج کے بارے میں CWC کو اطلاع دی۔ انہوں نے کہا کہ سینئر رہنماؤں سمیت، اراکین نے نتائج کا تجزیہ کرنے کے فیصلے میں کھل کر حصہ لیا۔ یہ ایک مخلصانہ اور نتیجہ خیز تجزیہ تھا۔

      اس کے برعکس بی جے پی نے 403 رکنی اتر پردیش اسمبلی میں 255 نشستیں حاصل کیں، جبکہ اس کے دو اتحادیوں اپنا دل (سونی لال) اور نشاد پارٹی نے مزید 18 نشستیں حاصل کیں۔ یوگی آدتیہ ناتھ دوسری مدت کے لیے وزیر اعلیٰ کے عہدے کا حلف لینے والے ہیں۔ بی جے پی کے 11 وزرا اپنی متعلقہ اسمبلی سیٹوں سے انتخابی جنگ ہارنے کے بعد کابینہ میں مزید اسامیاں ہونے کا امکان ہے۔ نئے چہروں میں قنوج سے الیکشن جیتنے والے ریٹائرڈ آئی پی ایس عاصم ارون اور آگرہ رورل سے ایم ایل اے بیبی رانی موریہ کو بڑی ذمہ داری سونپی جا سکتی ہے۔

      پارٹی کو ریاستی حکمت عملی بنانی ہوگی: راہل گاندھی

      ذرائع کے مطابق کانگریس ورکنگ کمیٹی کی میٹنگ میں راہل گاندھی نے کہا کہ پارٹی کو ریاستی حکمت عملی بنانی ہوگی، کہیں اکیلے یا اتحاد میں انتخابات میں مقابلہ کرنے پر فیصلہ کرنا ہوگا۔ اس کے ساتھ ہی پرینکا گاندھی نے کہا کہ ہمیں معلوم تھا کہ نتیجہ ہمارے حق میں نہیں آئے گا، لیکن سخت محنت کی اور لڑا۔ میٹنگ کے دوران پانچ انتخابی شکست والی ریاستوں کے انچارجیس نے رپورٹیں پیش کیں۔ اجلاس میں جی 2۳ کے رہنماؤں کا رویہ ڈھیلا رہا۔ اس میٹنگ میں سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ نے شرکت نہیں کی۔ سینئر لیڈر اے کے انٹونی کووڈ 19 سے متاثر ہونے کی وجہ سے میٹنگ میں شرکت نہیں کر سکے۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      منور رانا کو MP کے وزیر وشواس سارنگ نے آڑے ہاتھوں لیا، ممتاز شاعر سے متعلق کہہ دی اتنی بڑی بات
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: