உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اب بی جے پی لیڈر شازیہ علمی نے امت سبل ہتک عزت معاملہ میں مانگی معافی

    بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی لیڈر شازیہ علمی: فائل فوٹو۔

    بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی لیڈر شازیہ علمی: فائل فوٹو۔

    نئی دہلی۔ راجدھانی کی ایک عدالت نے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی لیڈر شازیہ علمی اور کانگریس لیڈر کپل سبل کے بیٹے امت سبل کی اس مشترکہ عرضی پرکل فیصلہ محفوظ کرلیا جس میں کہا گیا ہے کہ 2013کے ہتک عزت معاملہ میں شاذیہ علمی نے معافی مانگی ہے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی۔ راجدھانی کی ایک عدالت نے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی لیڈر شازیہ علمی اور کانگریس لیڈر کپل سبل کے بیٹے امت سبل کی اس مشترکہ عرضی پرکل فیصلہ محفوظ کرلیا جس میں کہا گیا ہے کہ 2013کے ہتک عزت معاملہ میں شاذیہ علمی نے معافی مانگی ہے۔ شازیہ علمی اس وقت عام آدمی پارٹی کی لیڈر تھیں اور انہوں نے امت سبل پر کئی الزامات لگائے تھے۔ اس معاملہ میں امت سبل نے ان کے خلاف ہتک عزت کا معاملہ درج کرایا تھا۔


      ذیلی عدالت نے 20ستمبر 2014کو تمام ملزمین دہلی کے وزیراعلی اروند کیجریوال، نائب وزیراعلی منیش سسودیا، شازیہ علمی، اور و کیل پرشانت بھوشن کے خلاف تعزیرات ہند کی دفعہ 500(ہتک عزت) کے تحت معاملہ شروع کیا تھا۔ گزشتہ مہینہ اروند کیجریوال اور  منیش سسودیا نے سبل سے یہ کہتے ہوئے معافی مانگ لی کہ ان کے خلاف لگائے گئے تمام الزامات بے بنیاد تھے اور اس طرح کے بے بنیاد الزامات لگانے پر وہ معافی مانگتے ہیں۔  سبل نے ان کے معافی نامہ کو قبول کرلیا تھا اور عدالت نے 19مارچ کو دونوں لیڈروں کو بری کردیا تھا۔


       سبل نے عدالت کے سامنے اپنے بیان درج کرائے اور یہ بھی کہا کہ شاذیہ نے اپنے وکیل کے ذریعہ معافی نامہ دیا ہے کہ وہ تمام الزامات بے بنیاد ہیں اور وہ معافی مانگتی ہیں۔ ایڈیشنل چیف میٹروپولیٹن مجسٹریٹ سمر وشال نے معاملہ کی سماعت کے بعد کہا کہ محترمہ علمی نے پریس کانفرنس میں لگائے اپنے الزامات پر معافی مانگ لی ہے اور اسے سبل نے قبول کرلیا ہے۔ اس کے بعد انہوں نے فیصلہ محفوظ کر لیا۔

      First published: