உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پڑھیں: سروے میں طاق وجفت فارمولے پر آئے چونکانے والے نتائج

    نئی دہلی۔ دہلی حکومت نے طاق وجفت فارمولے کی کامیابی کا دعوی کیا ہے۔

    نئی دہلی۔ دہلی حکومت نے طاق وجفت فارمولے کی کامیابی کا دعوی کیا ہے۔

    نئی دہلی۔ دہلی حکومت نے طاق وجفت فارمولے کی کامیابی کا دعوی کیا ہے۔

    • IBN7
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی۔ دہلی حکومت نے طاق وجفت فارمولے کی کامیابی کا دعوی کیا ہے۔ دہلی کے لوگوں کے بغیر آلودگی کے خلاف چلی مہم کامیاب نہیں ہو سکتی تھی۔ دہلی کے عوام نے حکومت کے طاق وجفت فارمولے کا ساتھ دیا۔ یہی وجہ ہے کہ ان دنوں سڑکوں پر گاڑیاں کم نکلیں۔

      طاق وجفت فارمولے کو لے کر اور اس دوران لوگوں کو ہوئے تجربے کو جاننے کے لئے آن لائن پورٹل لوکل سرکل ڈاٹ کام نے ایک سروے کیا۔ سروے کا نتیجہ بہت سے معاملات میں چونکانے والا ثابت ہوا۔ دہلی والوں سے طاق وجفت فارمولہ نافذ ہونے کے بعد ان کے تجربے کو لے کر آن لائن رائے مانگی گئی تھی۔

      پہلا سوال: کیا آپ سمجھتے ہیں کہ دہلی میں طاق وجفت  فارمولہ مؤثر طریقے سے نافذ ہوا؟

      كل 13 ہزار 791 رائے دہندگان میں سے 58٪ نے ہاں میں جواب دیا جبکہ 42٪ نے نہیں میں جواب دیا۔ یعنی زیادہ لوگ مانتے ہیں کہ فارمولہ مؤثر طریقے سے نافذ ہوا۔

      دوسرا سوال: طاق وجفت اصول کے دوران آپ نے کس طرح سفر کیا؟

      گیارہ ہزار 831 لوگوں میں سے 44٪ لوگوں نے کہا کہ انہوں نے ٹیکسی، آٹو یا پبلک ٹرانسپورٹ سے سفر کیا۔ 39٪ لوگوں نے دعوی کیا کہ انہوں نے پہلے ان کے پاس موجود طاق وجفت گاڑیوں کا استعمال کیا۔ 9٪ لوگوں نے دعوی کیا کہ انہوں نے موٹر سائیکل کا استعمال کیا۔ 8٪ لوگوں نے کہا کہ انہوں نے کار پولنگ کی۔

      تیسرا سوال: کیا آپ کو لگتا ہے کہ طاق وجفت اصول کے دوران آٹو / ٹیکسی والوں نے آپ سے زیادہ پیسے لئے؟

      گیارہ ہزار 852 نے اس پر اپنی رائے دی۔ 87٪ لوگوں نے مانا کہ آٹو ٹیکسی والوں نے ان سے زیادہ پیسے اینٹھے، جبکہ 13٪ لوگوں نے کہا کہ ان سے واجب کرایہ وصول کیا گیا۔

      چوتھا سوال: اگر طاق وجفت  فارمولہ جاری رکھا جاتا ہے تو کیا آپ دوسری گاڑی خریدنے کے بارے میں سوچیں گے؟

      گیارہ ہزار سات سو اٹھاون لوگوں میں سے 43 فیصد نے کہا کہ ہاں وہ دوسری گاڑی خریدنے کے بارے میں سوچیں گے جبکہ 42 فیصد نے کہا کہ نہیں وہ ایسا نہیں کریں گے۔ 15٪ دہلی والوں نے کہا کہ ان کے پاس پہلے سے طاق وجفت نمبر کی گاڑیاں ہیں۔

      پانچواں سوال: کیا طاق وجفت فارمولہ کو 15 جنوری کے بعد بھی لاگو کیا جانا چاہئے؟

      بارہ ہزار نو سو اٹھارہ دہلی والوں میں سے 42٪ لوگوں نے کہا کہ ہاں اس اصول کو جاری رکھا جانا چاہئے جبکہ 58٪ لوگوں نے کہا کہ اسے جاری نہیں رکھا جانا چاہئے۔ یعنی دہلی کے لوگوں کا بڑا طبقہ طاق وجفت  فارمولہ کو جاری رکھنے کے حق میں نہیں ہے۔
      First published: