ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

بابری مسجد انہدام معاملہ میں اگر کوئی سزا ہوئی تو میں اسے بھگوان کا پرساد مان کر قبول کروں گی: اوما

اوما بھارتی نے اپنی وزارت کے ایک پروگرام کے بعد نامہ نگاروں سے بات چیت میں کہا کہ ایودھیا تحریک میں ان کی شرکت تھی اور اس پر وہ فخر محسوس کرتی ہیں۔

  • UNI
  • Last Updated: Mar 07, 2017 03:06 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
بابری مسجد انہدام معاملہ میں اگر کوئی سزا ہوئی تو میں اسے بھگوان کا پرساد مان کر قبول کروں گی: اوما
اوما بھارتی: فائل فوٹو

نئی دہلی۔ بھارتیہ جنتا پارٹی کی سینئر لیڈر اور آبی وسائل و گنگا تحفظ کی مرکزی وزیر اوما بھارتی نے آج کہا کہ انہوں نے ایودھیا تحریک میں حصہ لیا تھا اور بابری مسجد کو منہدم کرنے کے معاملے میں اگر انہیں کوئی سزا ہوئی تو اسے وہ بھگوان کا پرساد مان کر قبول کریں گی۔ اوما بھارتی نے اپنی وزارت کے ایک پروگرام کے بعد نامہ نگاروں سے بات چیت میں کہا کہ ایودھیا تحریک میں ان کی شرکت تھی اور اس پر وہ فخر محسوس کرتی ہیں۔


اس سوال پر کہ بابری مسجد انہدام معاملے میں اگر عدالت انہیں سزا سناتی ہے تو وہ کیا کریں گی، انہوں نے کہا کہ وہ عدالت کے فیصلے کو قبول کریں گی اور اسے بھگوان کا پرساد مانیں گی۔ ایک اور سوال کے جواب میں محترمہ بھارتی نے کہا کہ اترپردیش اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کی جیت ہوگی۔ لیکن انہوں نے اس بارے میں تبصرہ کرنے سے انکار کر دیا کہ پارٹی کسے وزیر اعلی بنائے گی۔

First published: Mar 07, 2017 03:06 PM IST