உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Gyanvapi Mosque: گیانواپی مسجدسے متعلق ویڈیوگرافی آج ہوگی مکمل، ’سروے مندر کے دعوے کو کرےگا مضبوط‘

    متھرا کی ایک عدالت میں دو درخواستیں دائر کی گئیں

    متھرا کی ایک عدالت میں دو درخواستیں دائر کی گئیں

    دریں اثنا متھرا کی ایک عدالت میں دو درخواستیں دائر کی گئیں جس میں سری کرشن جنم بھومی سے متصل شاہی عیدگاہ مسجد کا معائنہ کرنے کے لیے ایک ایڈوکیٹ کمشنر کی تقرری کی درخواست کی گئی تاکہ مسجد کے احاطے میں ہندو نوادرات اور قدیم مذہبی نوادرات کی موجودگی کی تصدیق کی جا سکے۔

    • Share this:
      وارانسی میں گیانواپی مسجد (Gyanvapi Mosque) کے احاطے میں ویڈیو گرافک سروے اتوار کو مسلسل دوسرے دن سخت سیکورٹی کے درمیان منعقد ہوا، ایڈوکیٹ ہری شنکر جین نے کہا کہ اس مشق نے ان کے دعوے کو مزید تقویت بخشی ہے۔

      جین نے کہا کہ کل (15 مئی 2022 ) کے سروے نے ہمارے دعوے کو مزید تقویت دی ہے۔ آج (پیر 16 مئی 2022) مشق مکمل ہو جائے گا۔ سروے 2 گھنٹے تک ہو گا۔ ایک وکیل جو ان خواتین کی نمائندگی کر رہی ہیں جو مسجد کی بیرونی دیواروں پر موجود بتوں کے سامنے روزانہ پوجا کرنے کی اجازت مانگ رہی ہیں۔

      عدالت کے مقرر کردہ کمشنروں کی قیادت میں ایک سروے ٹیم اور دونوں فریقوں کے وکلاء، پولیس افسران اور ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ نے مسجد کمپلیکس میں آپریشن کیا۔ یہ مسجد مشہور کاشی وشوناتھ مندر (Kashi Vishwanath temple) کے قریب واقع ہے۔

      یہ سروے عدالت کے حکم کے مطابق کیا جا رہا ہے اور پولیس نے اس بات کو یقینی بنانے کے لیے وسیع انتظامات کیے تھے کہ مسجد اور کاشی وشوناتھ مندر جانے والے لوگوں کو کسی قسم کی تکلیف کا سامنا نہ کرنا پڑے۔

      ڈپٹی کمشنر آف پولیس (ڈی سی پی) وارانسی آر ایس۔ گوتم نے کہا کہ راستوں کو کھلا رکھا گیا ہے تاکہ زائرین کو کسی قسم کی پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے اور اس کے مطابق پولیس اہلکاروں کو تعینات کیا جا رہا ہے۔ وارانسی کورٹ نے سروے ٹیم کو 17 مئی تک سروے مکمل کرنے اور اس کے سامنے تفصیلی رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت دی ہے۔

      سروے گزشتہ ہفتے مسجد کمیٹی کے اعتراضات کے درمیان رک گیا تھا، جس میں دعویٰ کیا گیا تھا کہ ایڈوکیٹ کمشنر کے پاس احاطے کے اندر فلم بنانے کا مینڈیٹ نہیں ہے۔ کمیٹی نے ان پر تعصب کا الزام لگایا اور ان کی تبدیلی کی درخواست دائر کی۔

      یہ بھی پڑھیں:
      شیوسینا کی ریلی میں Uddhav Thackerayکی للکار،کہا-بی جے پی داود کو بھی لڑواسکتی ہے الیکشن

      لوگوں نے مسجد کے باہر سخت حفاظتی انتظامات کے درمیان نماز جمعہ ادا کی۔ جمعرات کو اپنے حکم میں، ضلعی عدالت نے کہا کہ اگر سروے کے لیے کمپلیکس کے مخصوص علاقوں تک رسائی کے لیے چابیاں دستیاب نہیں ہیں تو تالے توڑ دیے جائیں۔

      مزید پڑھیں: Gold: سونے سے ملازمین کی تنخواہوں کی ادائیگی! جانیے دنیا کی کونسی ہے وہ کمپنی؟



      دریں اثنا متھرا کی ایک عدالت میں دو درخواستیں دائر کی گئیں جس میں سری کرشن جنم بھومی سے متصل شاہی عیدگاہ مسجد کا معائنہ کرنے کے لیے ایک ایڈوکیٹ کمشنر کی تقرری کی درخواست کی گئی تاکہ مسجد کے احاطے میں ہندو نوادرات اور قدیم مذہبی نوادرات کی موجودگی کی تصدیق کی جا سکے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: