உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Supreme Court: مفت کلچرکےضمن میں پینل کی تشکیل پرروک، کیس 3 ججوں کی بنچ کو منتقل

    جس کی وجہ سے ملک کی معیشت کو نقصان ہوسکتا ہے

    جس کی وجہ سے ملک کی معیشت کو نقصان ہوسکتا ہے

    اس ہفتے کے شروع میں عدالت نے مشاہدہ کیا تھا کہ جب تک تمام سیاسی جماعتوں کی جانب سے ایسے مفت کلچر کو روکنے کے لیے کوئی شعوری فیصلہ نہیں کیا جاتا، تب تک یہ مفت کا کلچر معیشت کو تباہ کرتا رہے گا۔ Supreme Court On freebies

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | Mumbai | Andhra Pradesh | Karnal | Jammu
    • Share this:
      Supreme Court On freebies: سپریم کورٹ نے جمعہ کے روز مفت کلچر کے کیس کو تین ججوں کی بنچ کو بھیج دیا ہے۔ خبر رساں ایجنسی اے این آئی کے مطابق سپریم کورٹ نے کہا کہ اس سے انکار نہیں کیا جا سکتا کہ انتخابی جمہوریت میں حقیقی طاقت ووٹرس کے پاس ہوتی ہے اور ووٹرس پارٹیوں اور امیدواروں کا فیصلہ کرتے ہیں۔

      سیاسی بحث کے درمیان حال ہی میں کئی وزرائے اعلیٰ نے اس معاملے پر اپنے خیالات کا اظہار کیا تھا۔ جہاں دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجروال (Arvind Kejrwal) سبسڈی والے پانی اور بجلی پر آواز اٹھا رہے ہیں۔ وہیں تمل ناڈو کے وزیر اعلی ایم کے اسٹالن (MK Stalin) اور آندھرا کے وزیر اعلی وائی ایس جگن موہن ریڈی (YS Jagan Mohan Reddy) نے بھی حال ہی میں عوامی بہبود کی اسکیموں کی اہمیت پر تبصرہ کیا ہے۔

      اس ہفتے کے شروع میں عدالت نے مشاہدہ کیا تھا کہ جب تک تمام سیاسی جماعتوں کی جانب سے ایسے مفت کلچر کو روکنے کے لیے کوئی شعوری فیصلہ نہیں کیا جاتا، تب تک یہ مفت کا کلچر معیشت کو تباہ کرتا رہے گا۔ سپریم کورٹ نے یہ بھی کہا کہ انتخابی وعدوں کو منظم کرنے کا مسئلہ ناقابلِ انتظام ہے، جس کی وجہ سے ملک کی معیشت کو نقصان ہوسکتا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:

      Raja Singh: راجہ سنگھ منگل ہارٹ پولیس اسٹیشن کا روڈی شیٹر، حیدرآباد پولیس کا دعویٰ، PD ایکٹ کا نفاذ

      مرکزی حکومت کے ذرائع کا اس پر ردعمل ظاہر کیا۔ ذرائع نے کہا کہ سیاسی جماعتوں کے لیے کوئی جواز نہیں ہے کہ وہ مفت کی پیشکش کریں جس کا حکومتی خزانہ متحمل نہیں ہو سکتا اور آخرکار ریاست کے دیوالیہ ہونے کا باعث بنے۔ جب وہ مفت بجلی، پانی یا دیگر سہولیات مفت دینے کا وعدہ کرتے ہیں، تو وہ موجودہ نسلوں کو انعام دینے کے لیے آنے والی نسلوں سے قرض لے رہے ہوتے ہیں۔


      یہ بھی پڑھیں:

      Hyderabad : ٹی راجا سنگھ کے خلاف احتجاج جاری ، درجنوں مظاہرین کو کیا گیا گرفتار

      واضح رہے کہ بی جے پی (BJP) اور عام آدمی پارٹی (AAP) کے درمیان ریورڑی کلچر کے سلسلے میں سخت کھچ تان چل رہی ہے۔ مرکز نے اس معاملے پر دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال (Arvind Kejriwal) کے تبصروں اور الزامات کی یک طرفہ تردید کی ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: