ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

سابق فوجیوں کا الزام ، ون رینک ون پنشن کے مسئلے پر حکومت بار بار بدل رہی ہے موقف

نئی دہلی : ایک رینک، ایک پنشن کے معاملے پر گذشتہ 80 دنوں سے بھوک ہڑتال کرنے والے سابق فوجیوں نے حکومت پر بار بار اپنا موقف بدلنے کا الزام لگاتے ہوئے آج کہا کہ وہ اس مسئلے کو الجھانے میں مصروف ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Sep 03, 2015 08:26 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
سابق فوجیوں کا الزام ،  ون رینک ون پنشن کے مسئلے پر حکومت بار بار بدل رہی ہے موقف
نئی دہلی : ایک رینک، ایک پنشن کے معاملے پر گذشتہ 80 دنوں سے بھوک ہڑتال کرنے والے سابق فوجیوں نے حکومت پر بار بار اپنا موقف بدلنے کا الزام لگاتے ہوئے آج کہا کہ وہ اس مسئلے کو الجھانے میں مصروف ہے۔

نئی دہلی : ایک رینک، ایک پنشن کے معاملے پر گذشتہ 80 دنوں سے بھوک ہڑتال کرنے والے سابق فوجیوں نے حکومت پر بار بار اپنا موقف بدلنے کا الزام لگاتے ہوئے آج کہا کہ وہ اس مسئلے کو الجھانے میں مصروف ہے۔


سابق فوجیوں کی مشترکہ تنظیم کے ترجمان ریٹائرڈ کرنل انل کول نے جنترمنتر پرواقع دھرنے کی جگہ پر کہا کہ حکومت اوآر پی کے معاملے پر اپنا موقف واضح نہیں کررہی ہے اور وہ الگ الگ ثالثوں کے ذریعہ الگ الگ بات کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت خود ہی الجھن میں ہے اور اس مسئلے کو بھی الجھا رہی ہے ایسی صورت میں مسئلے کا حل کیسے نکل سکتا ہے۔


انہوں نے کہا کہ سابق فوجی مقررہ معمول کے وقفے پر پنشن کا جائزہ لینے کا مطالبہ کررہے ہیں اور وہ چاہتے ہیں کہ کسی بھی وقت کسی سینئر فوجی کی پنشن اس کے جونیئر فوجی سے کم نہیں ہونی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ او آر پی نافذ ہونے سے حکومت پر پڑنے والے مالی بوجھ کے بارے میں جان بوجھ کر غلط اعداد و شمار بتائے جارہے ہیں تاکہ لوگوں میں غلط فہمی پیدا ہو۔


سابق فوجی ہر سال پنشن کا جائزہ لینے کی بات کر رہے ہیں لیکن حکومت کا کہنا ہے کہ وہ ہر پانچ برس میں پنشن کا جائزہ لینے کو تیار ہے۔ سابق فوجیوں کا کہنا ہے کہ اگر پنشن کا جائزہ پانچ سال میں لیا جاتا ہے تو یہ او آر پی کی تشریح کے مطابق نہیں ہوگا۔


دریں اثنا سابق فوجیوں کی حکومت کے ثالثوں کے ساتھ بات چیت کا سلسلہ جاری ہے اور اگر پنشن کے جائزے کی میعاد کے معاملے پر دونوں فریقوں میں مفاہمت ہوتی ہے تو اس کا ایک دو روز میں ہونے والے بہار اسمبلی انتخابات کے اعلان سے پہلے ہوسکتا ہے۔ذرائع کے مطابق حکومت نے پنشن مقرر کرنے کے لئے سال 2013 کو بیس ایئر ماننے، نئی پنشن کو یکم اپریل 2014 سے نافذ کرنے اور ہر پانچ برس میں پنشن کا جائزہ لینے کی پیشکش کی ہے۔


سابق فوجیوں کا کہنا ہے کہ پہلے وہ ایک برس سے دو برس کی میعاد پر آئے اور اب وہ تین برس کی بات بھی منظور کرسکتے ہیں لیکن پانچ برس کا مطالبہ کیسے منظور کیا جاسکتا ہے۔خیال رہے کہ دس سابق فوجی گزشتہ تقریباً 20 دنوں سے تا مرگ بھوک ہڑتال پر بیٹھے ہیں جب کہ تین کی طبیعت خراب ہونے پر انہیں اسپتال میں داخل کرایاگیا ہے۔ اس کے علاوہ تقریباً 30 سابق فوجی گزشتہ 80 دنوں سے سلسلے وار بھوک ہڑتال کر رہے ہیں۔

First published: Sep 03, 2015 08:26 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading