ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

وزارت دفاع کے اس حکم سے خطرے میں ہیں ہزاروں زندگیاں

وزارت دفاع کے ایک حکم سے ہزاروں فوجی خاندانوں کی زندگیاں خطرے میں پڑسکتی ہیں۔ کینٹونمنٹ بورڈ ایریا کے سارے راستے کھول دیئے گئے ہیں۔ اڑی، پٹھان کوٹ، کلوچک، سجوان، نگروٹا وغیرہ حادثات کو بھی نظر انداز کردیا گیا ہے۔ ایک بار پھر سے کینٹونمنٹ کے راستے کھولنے پر غور کرنا چاہئے

  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
وزارت دفاع کے اس حکم سے خطرے میں ہیں ہزاروں زندگیاں
بی جے پی کی سینئر لیڈر اور مرکزی وزیر نرملا سیتا رمن: فائل فوٹو۔

نئی دہلی: وزارت دفاع کے ایک حکم سے ہزاروں فوجی خاندانوں کی زندگیاں خطرے میں پڑسکتی ہیں۔ کینٹونمنٹ  بورڈ ایریا کے سارے راستے کھول دیئے گئے ہیں۔ اڑی، پٹھان کوٹ، کلوچک، سجوان، نگروٹا وغیرہ حادثات کو بھی نظر انداز کردیا گیا ہے۔ ایک بار پھر سے کینٹونمنٹ کے راستے کھولنے پر غور کرنا چاہئے۔ یہ کہنا ہے آرمی افسروں کی بیویوں کی تنظیم آرمی ویلفیئر ایسوسی ایشن (آوا) کے ارکان کا۔


آرمی افسروں کی بیویوں کی تنظیم آرمی ویلفیئر ایسوسی ایشن (آوا) کی ارپتا بتاتی ہیں کہ ایک ماہ قبل وزارت دفاع نے سبھی شہریوں کے لئے ملک کے 62 کینٹونمنٹ بورڈ کے راستے کھولنے کے احکامات دیئے ہیں۔ اس حکم کے بعد سے چیک پوسٹ اور بیریئر ہٹا دیئے گئے ہیں۔ اب ان راستوں پر کوئی چیکنگ نہیں ہوگی۔ بغیر تلاشی کے گاڑی ڈرائیور آجا سکیں گے جبکہ اس حکم سے پہلے بغیر چیکنگ اور تلاشی کے کسی کو بھی آنے جانے کی اجازت نہیں تھی۔


ایسوسی ایشن سبھی روڈ کو پہلے کی طرح سے بند کرنے کا مطالبہ کررہی ہے۔ پورے ملک میں دستخطی مہم بھی چل رہا ہے۔ روڈ کیوں بند کئے جائیں، اس کے لئے ہم نے وزارت دفاع کو 15 مشورے بھی بھیجے ہیں۔


کینٹونمنٹ بورڈ کی سڑکیں سبھی کے لئے کھولنے کو لے کر مخالفت بڑھتی ہی جارہی ہے۔ فوجی افسران کے گھر والے مسلسل سیکورٹی کا حوالہ دے کر اس فیصلے کی مخالفت کررہے ہیں۔ فوج کی طرف سے بیان جاری کرکے لوکل ملٹری اتھارٹی کو فری ہینڈ دینے کی بات کہی گئی ہے، لیکن وزارت دفاع کی طرف سے آئے نئے آرڈر سے واضح ہے کہ بغیر وزارت کے اتفاق کے لوکل ملیٹری اتھارٹی سڑکوں کو مستقل طور پر بند نہیں کرسکتی۔ وہ صرف ایمرجنسی حالات میں دو ہفتے کے لئے ہی سڑکوں کو بند کرسکتی ہے۔  





وزارت دفاع کو بتائے بغیر بند نہیں ہوں گے روڈ

سڑکیں کھولنے کا آرڈر جاری کرنے کے بعد مخالفت کو دیکھتے ہوئے وزارت دفاع اس متعلق ایک میٹنگ بھی کرچکا ہے۔ میٹنگ میں وزارت دفاع نے ایک آرڈر آرمی چیف، نیوی چیف، ایئر فورس چیف اور ڈی جی ڈیفنس اسٹیٹس کو بھیجا ہے۔ اس آرڈر میں واضح طور پر کہا گیا ہے کہ بغیر پورے طریقہ کار پر عمل کئے کینٹونمنٹ ایریا کی کوئی بھی پبلک روڈ لوکل ملٹری اتھارٹی بند نہیں کرسکتی۔ اس آرڈر کے مطابق سڑکیں بند کرنے کا ڈرافٹ آرڈر کم سے کم تین مقامی اخبارات اور کینٹ بورڈ کی ویب سائٹ میں شائع کرکے عوام سے ان کے مشورہ یا اعتراض طلب کی جانی چاہئے۔ ایمرجنسی میں اگر سڑکیں بند کرنی پڑیں تو بھی اس کی اطلاع وزارت دفاع کے پاس بھیجنی ہوگی۔

یہ ہے وزارت دفاع کا موقف

کینٹونمنٹ وہ خاص جگہ ہے جہاں سروس اہلکار اور ان کے اہل خانہ رہتے تھے۔ گزشتہ کچھ برسوں میں شہروں کی توسیع ہوئی ہے اور بڑی تعداد میں شہری اب کینٹونمنٹس کے قریب میں رہتے ہیں، ان میں سے کچھ شہری فوجی اہلکار وں اور ان کے اہل خانہ کو ضروری خدمات فراہم کرتے ہیں۔ کینٹونمنٹس میں کچھ اچھے عوامی اور آرمی پبلک اسکول بھی موجود ہیں، جہاں شہریوں کے بچے ان اسکولوں میں پڑھ رہے ہیں۔
First published: Jun 04, 2018 05:38 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading