உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کانگریس لیڈر کپل سبل کے گھر ڈنر پر جمع ہوئے اپوزیشن لیڈر، کہا- بی جے پی کے خلاف مل کر لڑنا ہوگا

    کانگریس لیڈر کپل سبل کے گھر ڈنر پر جمع ہوئے اپوزیشن لیڈر، کہا- بی جے پی کے خلاف مل کر لڑنا ہوگا

    کانگریس لیڈر کپل سبل کے گھر ڈنر پر جمع ہوئے اپوزیشن لیڈر، کہا- بی جے پی کے خلاف مل کر لڑنا ہوگا

    کانگریس لیڈر کپل سبل (Kapil Sibal) کے ذریعہ منعقدہ ڈنر میں مدعو اپوزیشن کے ایک لیڈر نے کہا، ’اتحاد کو مزید مضبوط کرنے کے لئے ایسی میٹنگیں مزید منعقد کی جانی چاہئے‘۔ کپل سبل نے پیر کو ڈنر کی میزبانی کی، جس میں کانگریس سربراہ سونیا گاندھی (Sonia Gandhi) کو تنظیمی سدھار کے لئے خط لکھنے والے ’جی-23‘ کے تقریباً سبھی اراکین موجود تھے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: کانگریس لیڈر اور سابق مرکزی وزیر کپل سبل (Kapil Sibal) کے ذریعہ منعقدہ ڈنر میں ایک درجن سے زیادہ سیاسی جماعتوں کے اعلیٰ لیڈروں نے پیر کو ان کے تین مورتی لین واقع رہائش گاہ پر ملاقات کی۔ اس دوران انہوں نے سال 2002 میں اترپردیش اسمبلی انتخابات (UP Election 2022) اور سال 2024 کے عام انتخابات (Lok sabha Chunav 2024) میں اپوزیشن جماعتوں کے اتحاد کو مضبوط کرنے اور بی جے پی کو شکست دینے کے اپنے عہد کا اظہار کیا۔ ذرائع نے یہ جانکاری دی۔ کپل سبل نے پیر کو ڈنر کی میزبانی کی، جس میں کانگریس سربراہ سونیا گاندھی (Sonia Gandhi) کو تنظیمی سدھار کے لئے خط لکھنے والے ’جی-23‘ کے تقریباً سبھی اراکین موجود تھے۔

      کانگریس لیڈر کپل سبل کے ذریعہ منعقدہ ڈنر میں مدعو اپوزیشن کے ایک لیڈر نے کہا،  ’اتحاد کو مزید مضبوط کرنے کے لئے ایسی میٹنگیں مزید منعقد کی جانی چاہئے‘۔ ہمیں بی جے پی کو 2022 میں پہلے اترپردیش میں اور پھر 2024 کے عام انتخابات میں ہرانا ہے‘۔ اس دوران آر جے ڈی (RJD) کے لالو پرساد یادو، نیشنلسٹ کانگریس پارٹی (NCP) سربراہ شرد پوار، سماجوادی پارٹی (Samajwadi Party) کے اکھلیش یادو اور رام گوپال یادو، مارکسوادی کمیونسٹ پارٹی کے سیتا رام یچوری، بھارتیہ کمیونسٹ پارٹی کے ڈی راجا، نیشنل کانفرنس کے عمر عبداللہ اور کانگریس لیڈر پی چدمبرم بھی موجود تھے۔

       کانگریس لیڈر کپل سبل کے ذریعہ منعقدہ ڈنر میں مدعو اپوزیشن کے ایک لیڈر نے کہا،  ’اتحاد کو مزید مضبوط کرنے کے لئے ایسی میٹنگیں مزید منعقد کی جانی چاہئے‘۔

      کانگریس لیڈر کپل سبل کے ذریعہ منعقدہ ڈنر میں مدعو اپوزیشن کے ایک لیڈر نے کہا، ’اتحاد کو مزید مضبوط کرنے کے لئے ایسی میٹنگیں مزید منعقد کی جانی چاہئے‘۔


      اس کے ساتھ ہی شیو سینا کے سنجے راوت، عام آدمی پارٹی کے سنجے سنگھ، ترنمول کانگریس کے لیڈر کلیان بنرجی اور ڈیریک اوبرائن، بیجو جنتا دل کے لیڈر پناکی مشرا اور امر پٹنائک، دروڑ منے کشگم کے تروچی شیوا اور ٹی کے ایلن گوون، آر ایل ڈی کے جینت چودھری اور ٹی آر ایس کے لیڈر بھی ڈنر میں شامل ہوئے۔ بتایا گیا کہ اس ڈنر میں اکالی دل کے لیڈر نریش گجرال بھی موجود تھے۔ کپل سبل کے اس ڈنر میں وائی ایس آر سی پی اور ٹی ڈی پی کے لیڈر بھی موجود تھے۔

      2022 اور 2024 کے لئے آنا ہوگا سبھی کو ساتھ: اپوزیشن لیڈر

      جو ’جی-23‘ لیڈر ڈنر میں شامل ہوئے، ان میں میزبان کپل سبل کے علاوہ غلام نبی آزاد، بھوپیندر سنگھ ہڈا، آنند شرما، مکل واسنک، پرتھوی راج چوہان، منیش تیواری اور ششی تھرور شامل تھے۔ اعلیٰ اپوزیشن لیڈروں کے ساتھ ’جی-23‘ کے کانگریس لیڈروں کی یہ پہلی ایسی ملاقات ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ کپل سبل کے ابتدائی تبصرہ کے بعد سبھی لیڈروں نے کہا کہ انہیں 2022 میں اتر پردیش میں اور پھر 2024 کے لوک سبھا انتخابات میں بی جے پی کو شکست دینے کے لئے ایک ساتھ آنا ہوگا۔

      میٹنگ میں ایک لیڈر نے کہا، ’ہمیں بی جے پی کے خلاف مل کر لڑنا چاہئے اور متحد رہنا چاہئے۔ ایک دیگر لیڈر نے الزام لگایا کہ بی جے پی نے ’جمہوریت اور حکومت پر کنٹرول رکھنے والے جمہوری اداروں کو برباد کر دیا ہے‘۔ انہوں نے کہا، ’ہمیں بی جے پی کو ہرانا ہوگا اور ملک میں جمہوریت بحال کرنا ہوگا‘۔ ذرائع کے مطابق، لیڈروں نے یہ بھی الزام لگایا کہ بی جے پی نے خصوصی طور پر وبا کے دوران اور اس کے بعد سماج کے مظلوم اور غریب طبقات کے لئے کچھ نہیں کیا ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ اپوزیشن لیڈروں نے بھی کانگریس کو مضبوط کرنے کے لئے جی-23 لیڈروں کے گروپ کی کوششوں کی تعریف کی۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: