ہوم » نیوز » No Category

یو پی اردو اکیڈمی کے انعامات پر تنا زعات کا سایہ

الہ آباد : یو پی اردو اکیڈمی کی طرف سے کتابوں پر دئے جانے والے انعامات پر نیا تنازع اٹھ ہوسکتا ہے ۔ اردو کے معروف غیر مسلم ادیب ڈاکٹر اجئے مالویہ نے اردو اکیڈمی پر کئی سنگین الزامات لگاتے ہوئے کہا ہے کہ اردو اکیڈمی ہندو ادیبوں کی تخلیقات کو جان بوجھ کر نظر انداز کر رہی ہے ۔

  • Pradesh18
  • Last Updated: Mar 30, 2016 08:53 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
یو پی اردو اکیڈمی کے انعامات پر تنا زعات کا سایہ
الہ آباد : یو پی اردو اکیڈمی کی طرف سے کتابوں پر دئے جانے والے انعامات پر نیا تنازع اٹھ ہوسکتا ہے ۔ اردو کے معروف غیر مسلم ادیب ڈاکٹر اجئے مالویہ نے اردو اکیڈمی پر کئی سنگین الزامات لگاتے ہوئے کہا ہے کہ اردو اکیڈمی ہندو ادیبوں کی تخلیقات کو جان بوجھ کر نظر انداز کر رہی ہے ۔

الہ آباد : یو پی اردو اکیڈمی کی طرف سے کتابوں پر دئے جانے والے انعامات پر نیا تنازع اٹھ ہوسکتا ہے ۔ اردو کے معروف غیر مسلم ادیب ڈاکٹر اجئے مالویہ نے اردو اکیڈمی پر کئی سنگین الزامات لگاتے ہوئے کہا ہے کہ اردو اکیڈمی ہندو ادیبوں کی تخلیقات کو جان بوجھ کر نظر انداز کر رہی ہے ۔اجئے مالویہ کے اس االزام کے بعد اکیڈمی کی انعام کمیٹی سوالات کے گھیرے میں آگئی ہے ۔ساتھ ہی ساتھ ڈا کٹر اجئے مالویہ نے کتاب پر پانچ ہزار روپے کے انعام کو واپس کر نے کا فیصلے کیا ہے ۔

خیال رہے کہ اس سے قبل بھی یو پی اردو اکیڈمی کے انعامات پر سوالات اٹھتے رہے ہیں ۔ متعدد لوگوں کا کہنا ہے کہ یو پی اردواکیڈمی میں زیادہ تر انعاما ت ایسے لوگوں کو دئے جاتے ہیں ، جو برسراقتدار پارٹی کے زیادہ قریب ہوتے ہیں ۔

اردو ادب میں ہندو مذہب کے اثرات پر کئی اہم کتابیں تحریر کرنے والے معروف ادیب ڈاکٹر اجئے ما لویہ کی نئی کتاب نئی فکریاتی جہات پر اردو اکیڈمی نے صرف پانچ ہزار کا انعام دیا ہے۔ ڈاکٹر اجئے مالویہ اکاڈمی کے اس فیصلے سے ناراض ہیں ۔ان کا کہنا ہے کہ اردو اکیڈمی غیرمسلم اردو ادیبوں کے تعلق سےامتیازی سلوک برت رہی ہے۔

ڈاکٹر اجئے مالویہ کا الزام ہے کہ اردو اکیڈمی نے ایک ایک لاکھ روپئے کے انعامات جن ادیبوں کو دئے ہیں ، وہ اس کے قطعی حقدار نہیں ہیں ، لیکن اردو اکیڈمی کی انعام کمیٹی نے اجئے مالویہ کے الزامات کو یکسر مسترد کر دیا ہے ۔ انعام کمیٹی کے رکن پروفیسر علی احمد فاطمی کا کہنا ہے کہ اجئے مالویہ اس معاملے کو بلا وجہ طول دے رہے ہیں۔

First published: Mar 30, 2016 08:53 PM IST