ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

امن کی اپیل کے بعد پاکستانی فوجیوں نے پھر برسائی گولیاں ، بی ایس ایف کے دو جوان شہید

ہندوستان اور پاکستان کے درمیان 2003 کے سیز فائر سمجھوتہ کو پوری طرح سے نافذ کرنے کے فیصلہ کے محض کچھ ہی دنوں بعد پاکستانی رینجرس نے بین الاقوامی سرحد پر ایک مرتبہ پھر گولی باری کی

  • Agencies
  • Last Updated: Jun 03, 2018 08:41 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
امن کی اپیل کے بعد پاکستانی فوجیوں نے پھر برسائی گولیاں ، بی ایس ایف کے دو جوان شہید
علامتی تصویر

سری نگر : ہندوستان اور پاکستان کے درمیان 2003 کے سیز فائر سمجھوتہ کو پوری طرح سے نافذ کرنے کے فیصلہ کے محض کچھ ہی دنوں بعد پاکستانی رینجرس نے بین الاقوامی سرحد پر ایک مرتبہ پھر گولی باری کی ، جس میں بی ایس ایف کے دو جوان شہید ہوگئے ہیں ۔ اس گولی باری میں کم سے کم 40 گاوں متاثر ہوئے ہیں ، جہاں چار لوگوں کے زخمی ہونے کی بھی خبر ہے ۔ کسی اشتعال کے بغیر کی گئی اس گولی باری کا بی ایس ایف بھی معقول جواب دے رہی ہے۔

بی ایس ایف کے ایک سینئر اہلکار نے بتایا کہ بین الاقوامی سرحد سے متصل اخنور سیکٹر کے پرگوال علاقہ میں پاکستانی جوانوں نے دیر رات تقریبا 1:15 بجے گولی باری شروع کردی ، جس میں اگلی چوکیوں کی حفاظت پر مامور اے ایس آئی ایس این یادو اور کانسٹیبل وی کے پانڈے سنگین طور پر زخمی ہوگئے ۔ انہیں علاج کیلئے فوری طور پر اسپتال میں داخل کرایا گیا ، جہاں انہوں نے دم توڑ دیا۔

سرحد پر گولی باری کا یہ تازہ واقعہ ایسے وقت میں پیش آیا ہے ، جب گزشتہ ہفتہ ہی ہندوستان اور پاکستان کے ڈی جی ایم او نے جموں و کشمیر میں سرحد پر گولی باری روکنے کیلئے 2003 کے سیز فائر سمجھوتہ کو پوری طرح سے نافذ کرنے سے اتفاق کیا تھا۔

First published: Jun 03, 2018 08:41 AM IST