ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

آئی ایس آئی کے سابق سربراہ نے قبول کیا، کشمیر میں ہم نے بنائی تھی حریت

پاکستان کی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی کے سابق سربراہ محمد اسد درانی نے یہ قبول کیا ہے کہ سروسز انٹیلی جنس (آئی ایس آئی)نے ہی وادی میں حریت کا بیج بویا تھا۔پاکستان کی جانب سے اپنی طرح کا یہ پہلا قبول نامہ ہے۔

  • News18.com
  • Last Updated: May 22, 2018 12:38 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
آئی ایس آئی کے سابق سربراہ نے قبول کیا، کشمیر میں ہم نے بنائی تھی حریت
سری نگر میں پاکستان کے جھنڈے لہراتے مظاہرین:فائل فوٹو

پاکستان کی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی کے سابق سربراہ محمد اسد درانی نے یہ قبول کیا ہے کہ سروسز انٹیلی جنس (آئی ایس آئی)نے ہی وادی میں حریت کا بیج بویا تھا۔پاکستان کی جانب سے اپنی طرح کا یہ پہلا قبول نامہ ہے۔


درانی سال 1990 سے 92 کے درمیان  آئی ایس آئی کے سربراہ تھے ۔اسی دوران کشمیر وادی میں اتنے بڑے پیمانے پر ہتھیار بندعلیحدگی پسندوں کا تانڈو شروع ہوا تھا۔وہ کہتے ہیں "مجھے لگتا ہے کہ تحریک کو ایک سیاسی سمت دینے کیلئے حریت کاقیام ایک اچھا آئیڈیا تھا"َ۔درانی حریت کے قیام کا سہرا بھلے ہی اہنے سر باندھتے ہیں لیکن اسے کھلی چھوٹ دینے کا انہیں افسوس ہے۔


در اصل خفیہ ایجنسیوں اور ان کے کارناموں پر مبنی کتاب


میں صحافی آدتیہ سنہا کے ساتھ درانی اور سابق اے اےایس دلت کی چرچا میں یہ بات اجاگر ہوئی۔'Spy Chronicles RAW, ISI and the Illusion of Peace'

اس کتاب میں درانی اور دلت کے درمیان کشمیر ،حریت ،افغانستان ،اوسامہ بن لادین ،پرویز مشرف ،اجت ڈوبھال،اٹل بہاری واجپئی،پرویز مشرف اور واجپئی کے سرمیان ہوئی آگرہ کانفرنس اور نریندر مودی کو لیکر ہوئی بات چیت کا تفصیل سے ذکر ہے۔
First published: May 22, 2018 09:40 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading