உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Winter Session: لوک سبھا میں COVID-19پر بحث، راجیہ سبھا میں ارکان پارلیمنٹ کی معطلی پر  جاری رہ سکتا ہے ہنگامہ

     مرکزی وز یر صحت منسکھ منڈاویہ نے منگل کو پارلیمنٹ میں کہا کہ ملک میں اب تک کورونا وائرس، اومیکرون کا کوئی کیس رپورٹ نہیں ہوا ہے اور حکومت اس بات کو یقینی بنانے کے لیے ہر ممکن اقدامات کر رہی ہے کہ یہ ملک تک نہ پہنچے۔

    مرکزی وز یر صحت منسکھ منڈاویہ نے منگل کو پارلیمنٹ میں کہا کہ ملک میں اب تک کورونا وائرس، اومیکرون کا کوئی کیس رپورٹ نہیں ہوا ہے اور حکومت اس بات کو یقینی بنانے کے لیے ہر ممکن اقدامات کر رہی ہے کہ یہ ملک تک نہ پہنچے۔

    مرکزی وز یر صحت منسکھ منڈاویہ نے منگل کو پارلیمنٹ میں کہا کہ ملک میں اب تک کورونا وائرس، اومیکرون کا کوئی کیس رپورٹ نہیں ہوا ہے اور حکومت اس بات کو یقینی بنانے کے لیے ہر ممکن اقدامات کر رہی ہے کہ یہ ملک تک نہ پہنچے۔

    • Share this:
      نئی دہلی. پارلیمنٹ کے سرمائی اجلاس (Winter Session of Loksabha) کے دوران بدھ کو لوک سبھا میں COVID-19 وبائی مرض پر مختصر دورانیے کی بحث  (Discussion on covid-19 In Parliament)   کے لیے وقت مختص کیا گیا ہے۔ یہ بحث قاعدہ 193 کے تحت ہوگی، جس کے تحت اراکین کووڈ-19 کی نئی شکل اومیکرون کے بارے میں تفصیلات طلب کر سکتے ہیں۔

      جوشی نے کہا کہ بدھ کو لوک سبھا میں اس وبا پر مختصر مدت کی بحث ہوگی۔ مرکزی وز یر صحت منسکھ منڈاویہ نے منگل کو پارلیمنٹ میں کہا کہ ملک میں اب تک کورونا وائرس، اومیکرون کا کوئی کیس رپورٹ نہیں ہوا ہے اور حکومت اس بات کو یقینی بنانے کے لیے ہر ممکن اقدامات کر رہی ہے کہ یہ ملک تک نہ پہنچے۔


      پارلیمنٹ کے سرمائی اجلاس کی بقیہ مدت کے لیے راجیہ سبھا کے 12 ارکان کی معطلی کے پس منظر میں کانگریس نے منگل کو کہا کہ اپوزیشن کے ارکان کی جانب سے معافی مانگنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا کیونکہ حکومت پارلیمانی قواعد کی خلاف ورزی کرتے ہوئے معطلی کی تجویز دے رہی ہے۔ جس کے لیے اسے معافی مانگنی چاہیے۔ مرکزی اپوزیشن جماعت نے یہ بھی کہا کہ معطلی کو کالعدم قرار دیا جائے تاکہ ایوان کا کام آسانی سے چل سکے۔ راجیہ سبھا میں قائد حزب اختلاف ملکارجن کھرگے نے راجیہ سبھا کے چیئرمین وینکیا نائیڈو کو ایک خط لکھ کر ان سے معطلی کے فیصلے پر نظر ثانی کرنے اور معطلی کو منسوخ کرنے کی اپیل کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ کہنا درست نہیں کہ تحریک التوا ایوان سے منظور ہوئی کیونکہ پوری اپوزیشن اس کے خلاف تھی۔ کھرگے نے یہ بھی کہا کہ معطلی سے قبل اراکین کو اپنے خیالات کا اظہار کرنے کا موقع نہیں دیا گیا۔


      کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے کہا کہ پارلیمنٹ میں عوام کے نقطہ نظر کو اٹھانے کے لیے معافی نہیں مانگی جا سکتی۔ انہوں نے ٹویٹ کیا، 'کس چیز کے لیے معافی؟ پارلیمنٹ میں رائے عامہ کو اجاگر کرنے کے لیے؟ ہرگز نہیں!' منگل کو کانگریس نے اس معاملے کو لے کر پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں سے واک آؤٹ کیا۔ پارٹی نے راجیہ سبھا کی کارروائی کا دن بھر بائیکاٹ کیا۔


      واضح ہو کہ کورونا سے ایک بار پھر دنیا دہشت میں ہے۔۔اس بار کورونا کا نیا ویرینٹ ۔۔اومیکرون ۔۔فکر کی وجہ بنا ہے۔ اومیکرون ۔ دنیا کے کئی ممالک میں پہنچ چکا ہے۔ ڈیلٹا ویرینٹ سے دُگنی رفتار سے پھیلنے والے اس وائرس نے کئی ملکوں کو خوفزدہ کر دیا ہے۔ اومیکرون کا ہندوستان میں ابھی ایک بھی کیس نہیں ملا ہے لیکن احتیاط کے طور پر سرکار اور انتظامیہ نے مناسب اقدام شروع کردیئے ہیں ۔ اس پر تشویش اس وجہ سے جتائی جارہی ہے۔ کیوں کہ یہ ویریئنٹ زیادہ خطرناک ہے۔ یہی وجہ ہے کہ کئی ممالک نے فضائی آپریشن پر روک لگادی ہے۔ اس بیچ دہلی کے وزیراعلیٰ اروند کیجریوال نے ۔۔مرکزی سرکار سے اپیل کی ہے ک ۔انٹرنیشل اڑانیں رد کی جائیں۔سرکار۔۔یہ خطرے کو لیکر ۔۔چوکس ضرور ہے لیکن کیا جتنی تیاری ہونی چاہیئے اتنے ہم تیار ہیں اسی پر بات کریں گے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: