உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    آگستا معاملے میں پردے کے پیچھے سے کام کرنے والوں کو بے نقا ب کرے گی حکومت :پریکر

    نئی دہلی۔  وزیر دفاع منوہر پریکر نے آج کہا کہ اٹلی کی اگستا ویسٹ لینڈ کمپنی سے بارہ وی وی آئی پی ہیلی کاپٹر خرید کے سودے میں ضابطوں کو توڑ امروڑا گیا اور حکومت اس معاملے میں رشوت لینے والوں اور پردے کے پیچھے سے کام کرنے والوں کا چہرہ بے نقاب کرنے میں کوئی کسر نہیں باقی رکھے گی۔

    نئی دہلی۔ وزیر دفاع منوہر پریکر نے آج کہا کہ اٹلی کی اگستا ویسٹ لینڈ کمپنی سے بارہ وی وی آئی پی ہیلی کاپٹر خرید کے سودے میں ضابطوں کو توڑ امروڑا گیا اور حکومت اس معاملے میں رشوت لینے والوں اور پردے کے پیچھے سے کام کرنے والوں کا چہرہ بے نقاب کرنے میں کوئی کسر نہیں باقی رکھے گی۔

    نئی دہلی۔ وزیر دفاع منوہر پریکر نے آج کہا کہ اٹلی کی اگستا ویسٹ لینڈ کمپنی سے بارہ وی وی آئی پی ہیلی کاپٹر خرید کے سودے میں ضابطوں کو توڑ امروڑا گیا اور حکومت اس معاملے میں رشوت لینے والوں اور پردے کے پیچھے سے کام کرنے والوں کا چہرہ بے نقاب کرنے میں کوئی کسر نہیں باقی رکھے گی۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی۔  وزیر دفاع منوہر پریکر نے آج کہا کہ اٹلی کی اگستا ویسٹ لینڈ کمپنی سے بارہ وی وی آئی پی ہیلی کاپٹر خرید کے سودے میں ضابطوں کو توڑ امروڑا گیا اور حکومت اس معاملے میں رشوت لینے والوں اور پردے کے پیچھے سے کام کرنے والوں کا چہرہ بے نقاب کرنے میں کوئی کسر نہیں باقی رکھے گی۔ مسٹر پریکر نے اگستا ویسٹ لینڈ سودے میں رشوت کے معاملے پر راجیہ سبھا میں ہوئی بحث کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ اس میں کوئی شبہ نہیں رہ گیا ہے کہ اس سودے میں رشوت لی گئی ۔ اٹلی کی عدالت نے اپنے فیصلے میں کہا ہے کہ ہندوستان کے چوٹی کے پالیسی ساز اس معاملے میں شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اٹلی کی عدالت کے فیصلے میں سامنے آئے ناموں کا بھی نوٹس لیا جائے گا اور قصورواروں اور پردے کے پیچھے سے کام کرنے والوں کو بے نقاب کیا جائے گا۔


      وزیر دفاع نے کہا کہ اس سودے میں ضابطوں کو توڑ امروڑا گیا اور اگستا ویسٹ لینڈ کو دھیان میں رکھ کر ایک ہی وینڈر کی صور تحال بنانے کے لئے پیمانوں میں تبدیلی کی گئی ۔ انہوں نے کہا کہ اگستا کے ہیلی کاپٹر اے ڈبلیو 101 کو منتخب کرنے اور اس کے مخالف کو ہیلی کاپٹر کی دوڑ سے باہر کرنے کے لئے کیبن کی 1.8میٹر کی اونچائی کے پیمانے کو لازمی بنایا گیا جب کہ ابتدائی شرطو ں میں لازمی نہیں تھیں۔ اس قدم سے ایک وینڈر کی صورت بن گئی۔


      ا س سے پہلے کانگریس اراکین نے وزیر دفاع کے جواب کے دوران بار بار رخنہ ڈالنے کی کوشش کی۔ ان کا الزام تھا کہ مسٹر پریکر متضاد بیان دے رہے ہیں اور اس معاملے پر اپنے پہلے کے بیانات سے مکر رہے ہیں ۔ اپوزیشن کے لیڈر غلام نبی آزاد نے کہا کہ یہ افسوس کی بات ہے کہ وزیر دفاع نے بحث کا جواب اپنی پارٹی کے لیڈروں کے طرز پر دیا ، اس سے ایوان کی توہین ہوئی ہے۔ وزیر دفاع نے اس وقت کی یو پی اے حکومت پراگستا کے خلاف کارروائی شروع کرنے میں تاخیر کا الزام بھی لگایا ۔ انہوں نے کہا کہ سی بی آئی اور انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ نے اس معاملے میں تیزی نہیں دکھائی ۔ مسٹر پریکر نے کہا کہ ایک بڑی بے ضابطگی یہ ہوئی کہ سودے کی شرطیں اگستا ویسٹ لینڈ اٹلی کے ساتھ طے ہوئی اور ان کا جواب برطانیہ میں واقع اگستا ویسٹ لینڈ انٹرنیشنل لمیٹیڈ سے آیا ۔انہوں نے کہاکہ اس سودے کو اسی وقت منسوخ کردیا جانا چاہئے تھا۔

      First published: