உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاریکر آج کر سکتے ہیں ون رینک ون پنشن کا اعلان، 30 لاکھ فوجی اہلکاروں کو ہو گا فائدہ

    نئی دہلی۔ مودی حکومت آج سابق فوجیوں کے لئے بڑا اعلان کر سکتی ہے۔

    نئی دہلی۔ مودی حکومت آج سابق فوجیوں کے لئے بڑا اعلان کر سکتی ہے۔

    نئی دہلی۔ مودی حکومت آج سابق فوجیوں کے لئے بڑا اعلان کر سکتی ہے۔

    • IBN7
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی۔ مودی حکومت آج سابق فوجیوں کے لئے بڑا اعلان کر سکتی ہے۔ ذرائع کے حوالے سے خبر ہے کہ آج دوپہر 3 بجے ون رینک ون پنشن کا اعلان ہو سکتا ہے۔ خود وزیر دفاع منوہر پاریکر اس کا اعلان کرنے والے ہیں۔

      ون رینک ون پنشن 1 جولائی 2014 سے نافذ تصور کیا جائے گا، جبکہ اس کی بنیاد سال 2013 ہو گی۔ پانچ سال پر اس کا جائزہ لینے کے لئے حکومت یک رکنی عدالتی کمیشن بنائے گی جو کسی بھی طرح کی بے ضابطگی کی تحقیقات کے بعد 6 ماہ میں اپنی رپورٹ سونپے گی۔ سابق فوجیوں کو ایریر 6-6 ماہ پر ملے گا۔

      آپ کو بتا دیں کہ آج وزیر دفاع کو حیدرآباد جانا تھا لیکن آخری وقت پر ان کا دورہ منسوخ ہو گیا۔ اوآر اوپی لاگو کرنے کی کوشش کر رہے سابق فوجی دو ماہ سے زیادہ وقت سے مظاہرہ کر رہے ہیں۔ کل ختم ہوئی آر ایس ایس اورحکومت کی میٹنگ میں بھی اسے حل کرنے پر زور دیا گیا تھا۔ اس منصوبہ کے لاگو ہونے سے تقریبا 22 لاکھ سابق فوجیوں اور چھ لاکھ سے زیادہ جنگ میں مارے گئے فوجیوں کی بیواؤں کو فائدہ ہو گا۔

      کیا ہے ون رینک ون پنشن؟

      ون رینک ون پنشن کا مطلب ہے کہ ایک ہی عہدے سے ریٹائر ہونے والے افسروں کو ایک جیسی ہی پنشن ملے۔ یعنی 1980 میں ریٹائر ہوئے کرنل کو آج ریٹائر ہوئے کرنل کے برابر ہی پنشن ملے گی۔

      یہ اسکیم نافذ ہونے سے 30 لاکھ فوجی اہلکاروں کو فائدہ ہو گا، جو ریٹائر ہو چکے ہیں انہیں ایریر بھی ملے گا۔ ابھی تقریبا 14 لاکھ فوجی اور افسر فوج کا حصہ ہیں۔

      اس مسئلے سے کسی حکومت نے انکار نہیں کیا، لیکن کسی حکومت نے اس کو نافذ بھی نہیں کیا۔
      First published: