உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Paytm vs PhonePe: کیا پے ٹی ایم اور فون پے کے درمیان جاری ہے سخت مقابلہ؟ کون آگے اور کون پیچھے؟

    تصویر moneycontrol

    تصویر moneycontrol

    پے ٹی ایم نے کہا کہ اس نے تینوں ملازمین کو معطل کر دیا ہے، تحقیقات زیر التواء ہیں۔ کمپنی نے کہا کہ یہ مسئلہ فون پے اور اس کے سابق ملازم کے درمیان ہے۔

    • Share this:
      بہت ساری چیزیں اعلی فنٹیک کمپنیوں کے مابین تلخ دشمنی کو بڑھا سکتی ہیں۔ ان میں مارکیٹ شیئر کے علاوہ ایپس کی تخلیق، بہتر کریڈٹ الگورتھم تیار کرنا، بہترین ٹیلنٹ کی خدمات حاصل کرنا، یا انتہائی اہم لائسنس کا حصول شامل ہے۔ پے ٹی ایم (Paytm)، فون پے (PhonePe)، بھارت پے (BharatPe) اب ایک اور محاذ پر سخت مقابلہ کر رہے ہیں۔ یہ تمام ذرائع اسٹورز میں مزید اسپیکر ڈیوائسز کی تعیناتی کررہے ہیں۔ جو اپنے ایپس کے ذریعے ادائیگیوں کی وصولی کا اعلان کرتے ہیں۔

      اس کا تصور کیجیے کہ ایک دکاندار کئی گاہکوں کو کھانا فراہم کر رہا ہے۔ کچھ ادائیگی کیش کرتے ہیں اور دوسرے فرنٹ ڈیسک پر چسپاں کیے گئے اب ہر جگہ موجود کوئیک رسپانس (QR) کوڈ کو اسکین کرنے کے لیے ادائیگی کی ایپس کا استعمال کرتے ہیں۔ مصروف تاجر بمشکل اپنے موبائل فون کی اسکرینوں پر ادائیگی کی تصدیق کرنے والے پیغام پر ایک نظر ڈالتا ہے اور وہ چلا جاتا ہے۔

      بعد میں مرچنٹ کو پتہ چلتا ہے کہ ادائیگی اس کے اکاؤنٹ تک نہیں پہنچی اور اسے احساس ہوتا ہے کہ اسے دھوکہ دیا گیا تھا۔ ادائیگی کی تکمیل کی تصدیق کرنے والا موبائل اسکرین پیغام جعلی تھا۔ صنعت کے ایگزیکٹوز کا کہنا ہے کہ دھوکہ دہی سے پریشان ہو کر کچھ تاجر دوسری کمپنی کا QR کوڈ استعمال کرسکتے ہیں۔

      پے ٹی ایم وہ پہلا پلیٹ فارم تھا جس نے وبائی بیماری کی پہلی لہر کے دوران 2020 میں اپنا ساؤنڈ باکس لانچ کرکے اس مسئلے کو حل کرنے میں مدد کی۔ بروکریج فرم CLSA کے مطابق جون تک اسٹورز میں تعینات فنٹیک کمپنی کے 3.8 ملین پوائنٹ آف سیل ڈیوائسز میں سے 80 فیصد ساؤنڈ باکسز تھے۔ وبائی بیماری کے خاتمے کے ساتھ ہی صارفین اپنی خریداری کے لئے اسٹورز پر واپس آرہے ہیں ، دوسری فنٹیک کمپنیوں نے بھی اپنی ٹوپی کو رنگ میں ڈال دیا ہے۔

      بھارت پے نے فروری میں اپنا اسپیکر ڈیوائس لانچ کیا اور دعویٰ کیا کہ اس نے 300,000 مرچنٹ پارٹنرز کو شامل کیا ہے۔ اور پھر فون پے، یونائیٹڈ پیمنٹس انٹرفیس (UPI) کو بھی زیادہ سے زیادہ استعمال کیا جانا لگا۔

      پے ٹی ایم اور فون پے ہمیشہ سے سخت حریف رہے ہیں۔ پے ٹی ایم کے ایگزیکٹوز کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ اس بات کو اجاگر کرنے کا کوئی موقع نہیں چھوڑیں گے کہ امریکی خوردہ فروش وال مارٹ (Walmart) کی ملکیت والا فون پے (PhonePe) ملک کے ادائیگیوں کے ماحولیاتی نظام کے لیے ایک خودمختار خطرہ پیش کرتا ہے۔ کہا جاتا ہے کہ فون پے کے ایگزیکٹوز پے ٹی ایم کے چینی حمایتی علی بابا اور اینٹ فنانشل پر انگلیاں اٹھا کر اس کا مقابلہ کریں گے۔

      یہ بھی پڑھیں:

      MP News: ہندوستان، پاکستان اور بنگلہ دیش کے بیچ فیڈریشن بناکر مسائل کو حل کیا جا سکتا ہے : پنڈت راج ناتھ شرما

      اس طرح کی خفیہ دشمنی اب مزید کھلی جنگ میں بڑھ رہی ہے۔ منی کنٹرول نے 1 اگست کو اطلاع دی کہ فون پے نے پولیس سے رابطہ کیا اور الزام لگایا کہ پے ٹی ایم ملازمین نے گریٹر نوئیڈا میں اس کی کیو آر کوڈ شیٹس کا ڈھیر لگا دیا۔ 29 جولائی کی شکایت میں پے ٹی ایم کے تین ملازمین کی نشاندہی کی گئی ہے جو مبینہ طور پر ویڈیو میں ہیں، ان میں سے ایک فون پی کا سابق ملازم ہے۔
      یہ بھی پڑھیں:

      UNSC: ہندوستان کرےگا اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کےاراکین کی میزبانی، انسداددہشت گردی پرہوگابڑافیصلہ

      پے ٹی ایم نے کہا کہ اس نے تینوں ملازمین کو معطل کر دیا ہے، تحقیقات زیر التواء ہیں۔ کمپنی نے کہا کہ یہ مسئلہ فون پے اور اس کے سابق ملازم کے درمیان ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: